انسداد ڈینگی کاشوں کے باعث ڈینگی کا کوئی مریض سامنے نہ آیا،عبداللہ سنبل

انسداد ڈینگی کاشوں کے باعث ڈینگی کا کوئی مریض سامنے نہ آیا،عبداللہ سنبل

لاہور( جنرل رپورٹر) انسداد ڈینگی کاوشوں کی بنیاد پر لاہور میں ڈینگی کا ابھی تک کوئی مصدقہ مریض سامنے نہیں آیا یہ بات اپنی جگہ اطمینان بخش ہے لیکن اگلے تین ماہ کے دوران ہر لمحہ چوکس رہنا مکمل انسداد ڈینگی کے لیے ناگزیر ہے۔ کیمیائی اور حیاتیاتی طریقہ کو جامع انداز میں اختیار کیا جائے۔ اگست کا مہینہ بہت زیادہ اہمیت کا حامل ہے اس میں مانیٹرنگ اے سی خود کریں۔ لاروا ملنا اس بات کی تصدیق ہے کہ فیلڈ ٹیمیں اپنا کام کر رہی ہیں۔ آؤٹ ڈور کی نسبت ان ڈور ڈینگی لاروا کا زیادہ ملنا اس بات کو لازم کرتا ہے کہ ان ڈور ٹیموں سے جامع انداز میں گھروں کو چیک کرایا جائے اور لوگوں کو بھی اس سلسلے میں آگاہی لے کر انسداد ڈینگی سرگرمیوں میں حکومت و انتظامیہ کا ساتھ دینا چاہیے۔

اور ضلع ننکانہ، ضلع شیخوپورہ اور ضلع قصور 21اگست بروز اتوار کو انسداد ڈینگی ڈے کے طور پر منائیں اور بھرپور حکمت عملی کے ذریعہ اس کو آگے بڑھائیں۔کمشنر لاہور ڈویژن عبداﷲ خان سنبل نے ان خیالات کا اظہار انسداد ڈینگی کے حوالے سے منعقدہ اعلیٰ سطحی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں چاروں اضلاع کے ڈی سی اوز، ای ڈی اوز اور پی آئی ٹی بی و پی ایچ اے کے افسران نے شرکت کی۔اجلاس کو بتایا گیا کہ انسداد ڈینگی کی خلاف ورزی پر ضلع لاہور میں 1098 ایف آئی آرز کا اندراج، 381 گرفتاریاں جبکہ ان ڈور خلاف ورزی پر بھی ایک ایف آئی آر درج کرائی گئی ہے جبکہ 50 فیصد ڈینگی سٹاف اتوار کو بھی کام کرتا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1