خالی آسامیوں پر اہل نوجوان میرٹ پر بھرتی کئے جائیں

خالی آسامیوں پر اہل نوجوان میرٹ پر بھرتی کئے جائیں

خیبر ایجنسی (عمران شنواری ):

گورنر خیبر پختونخوا اقبال ظفر جھگڑا کے فاٹا کے مسلسل دوروں کے باوجود خیبر ایجنسی سمیت فاٹا کے مسائل حل نہیں ہو رہے محکمہ صحت محکمہ تعلیم اور دیگر اداروں کی بد حالی کئی سال پہلے کی طرح اب بھی جوں کی توں ہے سرکاری اداروں میں اعلی حکام کی طرف سے مانیٹرنگ کا کوئی نظام نہیں ہے جس کی وجہ سے ان اداروں کے اہلکار اپنی مرضی کے مطابق کام کرتے ہیں جس کے باعث بہتری کے آثار نظر نہیں آتے جبکہ دوسری جانب فاٹاکے سرکاری اداروں کے مرکز یعنی فاٹا سیکرٹریٹ کا نظام بھی کسی قبائلی علاقہ کے سرکاری دفتر سے کم نہیں ہے فاٹا سیکرٹریٹ کے ذرائع کے مطابق سیکرٹریٹ میں اس وقت کئی اہم پوسٹیں خالی پڑی ہیں جس میں سیکرٹری فنانس کی سیٹ خالی ہے جسکی اضافی ذمہ داری سیکرٹری ٹوگورنر کو دی گئی ہے اس طرح سیکرٹری لا ء اینڈ ارڈر ڈپٹی سیکرٹری لاء اینڈ ارڈر سیکرٹری سوشل سیکٹر ڈیپارنمنٹ سیکرٹری ایڈ منسٹر یشن اینڈکوارڈنیشن سمیت متعدد سیکشن افسروں کی پوسٹیں خالی پڑی ہیں جبکہ فاٹا تر قیاتی ادارہ (فاٹا ڈیولپمنٹ اتھارٹی )کے چیف ایگزیکٹیوکی ایڈ یشنل چیف سیکرٹری کے عہدے پر تر قی کے بعد ایف ڈی کے سربراہ کی پوسٹ خالی ہے ان اسامیوں کے خالی ہو نے سے بھی فاٹاکی حالت زار میں بہتری لانے اور دہشت گردی سے ،تاثرہ علاقوں اور عوام کی بحالی کا عمل بھی متاثر ہو رہا ہے حکومت کو ان پو سٹوں پر فاٹا کے تعلیم یا فتہ نوجوانوں کو موقع دینا چاہیے تاکہ وہ اپنے علاقوں کے مسائل سے اگاہی کی بنیاد پر اپنے علاقوں اور عوام کی بہتر انداز میں خدمت کر سکیں جبکہ اسامیوں کو پر کرنے کیلئے حکومت فوری طور پر ایکشن لے تاکہ ملک بھر کی طرح فاٹا میں بحالی اور تر قیاتی عمل شروع ہو سکے بصورت دیگر دہشت گردی کے خلا ف جاری حکومتی کوششیں کامیابی سے ہمکنار نہیں ہو سکیں ۔

فاٹا سیکرٹریٹ 2006میں قائم کیا گیا تاکہ قبائلی عوام کی مسائل حل ہو سکیں اور قبائلی عوام کو تر قیاتی کاموں اور فنڈز سے براہ راست فائدہ پہنچ سکے اس سلسلے میں سابق وفاقی وزیر اور سابق ممبر قومی اسمبلی علامہ نورالحق قادری نے بتایا کہ فاٹاسیکرٹریٹ قبائلی عوام کی بہتری کیلئے قائم کیا گیا لیکن وہ قبائلی عوام کی امنگوں پر پورا نہیں اترا فاٹاسیکرٹریٹ اوران میں کام کرنے والے نااہل ہیں اور اب جوپو سٹیں خالی ہیں یہ چیف ایگزیکٹیوکی پوسٹیں ہیں اور ان کا براہ ست اثر قبائلی عوام پر پڑتا ہے حکومت کو چاہئے کہ فوری طور پر خالی پوسٹوں پرتقرریاں کرے انہوں نے کہا کہ حال ہی میں تعینات اے سی ایس ڈاکٹر فدا وزیر ایک نیک اور کام کرنے والا افیسر ہے اور ان سے امیدیں ہیں اور وہ فاٹا میں تجربہ رکھتے ہیں اور خود بھی قبائلی ہیں ہمیں امید ہے کے بہتر کام کر سکیں گے اور خٓلی پوسٹوں پر تعیناتی بھی کریں گے۔

عوامی نیشنل پارٹی خیبر ایجنسی کے صدر شاہ حسین شینواری نے بتایا کہ فاٹاکے علاقے پسماندہ ہیں حکومت کو چاہیے کہ وہ ان خالی سیٹوں پر بغیر سفارش اور میرٹ پر لوگ تعینات کریں تاکہ وہ صحیح معنوں میں کام کر سکیں اور نئے لوگ فاٹا سے تعینات کریں اور اس کیلئے پہلے اشتہارات شائع کرکے بھرتی کی جائے خیبر ایجنسی کے سینئر صحافی سد ھیر احمد آفریدی نے بتایا کہ فاٹا سیکرٹریٹ سے قبائلی عوام کے مسائل کم نہیں ہو ئے بلکہ اس میں اور اضافہ ہو گیا ہے انہوں نے کہا کہ فاٹاسیکرٹریٹ اس وقت قائم کیا گیا جب باہر کی دنیا سے فاٹا کے نام پر کروڑوں روپے فنڈ آرہے تھے تو حکمرانوں کو فنڈ ہڑپ کرنے کیلئے ایسا ادارہ چاہئے تھا تاکہ فنڈ بھی ہڑپ کریں اور اس پر کوئی انگلی بھی نہیں اٹھا سکیں انہوں نے کہا کہ دہشت گردی اور تر قیاتی کاموں کیلئے اربوں روپے فنڈ آئے لیکن قبائلی عوام کی حالت بہتر ہونے کے بجائے مزید ابتر آگئی تحریک انصاف لنڈیکوتل کے سینئر رہنماء عبدالرازق شینواری نے بتایا کہ موجودہ دور میں فاٹاکی اہمیت بہت زیادہ ہے اس وقت اتنی اہم پوسٹیں خالی ہو نا افسوس کی بات ہے ایک طرف فاٹا کے عوام سخت مشکلات سے دو چار ہیں اور دوسری طرف فاٹاسیکرٹریٹ جو فاٹاکے عوام کے مسائل حل کرنے کیلئے قائم کیا گیا ہے کی اتنے اہم پوسٹیں خالی پڑی ہیں انہوں نے کہا کہ فاٹاسیکرٹریٹ فاٹامیں ہونا چاہئے اور خالی پوسٹوں پر فاٹاکے تعلیم یافتہ نوجوانوں کو موقع دینا چاہئے تاکہ وہ اپنے علاقوں کے مسائل سے اگاہی کی بنیاد پر اپنے علاقوں اور عوام کی بہتر انداز میں خدمت کر سکیں جبکہ آسامیوں کو پر کرنے کیلئے حکومت فوری طور پر ایکشن لے تاکہ ملک بھر کی طرح فاٹا میں بحالی اور تر قیاتی عمل شروع ہو سکے گز شتہ روز اخباری بیان میں کہ سیفران سیکرٹری خالی پوسٹوں کا نوٹس لیتے ہوئے انہوں نے اے سی ایس فاٹا کو فاٹا سیکرٹریٹ میں خالی پوسٹوں پر فوری تعیناتی کے ہدایت جاری کی ہے۔

مزید : ایڈیشن 2


loading...