عوامی تحریک نے حکومت مخالف مظاہروں اوردھرنوں کے شیڈول کو حتمی شکل دیدی

عوامی تحریک نے حکومت مخالف مظاہروں اوردھرنوں کے شیڈول کو حتمی شکل دیدی

لاہور(خبر نگار خصوصی)پاکستان عوامی تحریک نے ’’قصاص و سا لمیت پاکستان تحریک ‘‘کے سلسلے میں 20 اگست سے 30 اگست تک10 روزہ احتجاجی مظاہروں ،دھرنوں،جلسوں کے شیڈول کو حتمی شکل دے دی ۔احتجاجی شیڈول کے مطابق 20اگست کو لاہور، پشاور، حیدرآباد، لاڑکانہ، فیصل آباد، سبی، کوہاٹ، ڈیرہ مراد جمالی،مانسہرہ، سکھر،ڈیرہ اسماعیل خان سمیت 77 شہروں میں احتجاج و دھرنے ہونگے ۔21اگست کو گوجرانوالہ، سیالکوٹ، نارووال، حافظ آباد، منڈی بہاؤ الدین، گجرات سمیت 21 شہروں میں احتجاجی دھرنے ہونگے۔25اگست کو ڈی جی خان، لیہ، راجن پور، مظفر گڑھ سمیت 11 شہروں میں احتجاج ہو گا ۔27اگست کو بہاولپور، لودھراں، بہاولنگر، رحیم یار خان سمیت 11 شہروں میں احتجاج ہو گا۔ 28 اگست کوراولپنڈی، کوئٹہ، کراچی، جہلم ،چکوال ،اٹک ،ہری پور سمیت 20 شہروں میں احتجاجی مارچ و دھرنے ہونگے۔قصاص و سا لمیت پاکستان تحریک کے دوسرے احتجاجی فیز کا اعلان ڈاکٹر طاہر القادری 30 اگست کو اسلام کے احتجاج میں کرینگے۔احتجاجی مظاہروں سے پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ویڈیو لنک پر خطاب کرینگے۔ سنٹرل کور کمیٹی کا ہنگامی اجلاس پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری کی زیر صدارت مرکزی سیکرٹریٹ میں منعقد ہوا۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا احتجاج سانحہ ماڈل ٹاؤن کے قاتلوں سے قصاص لینے اور پاکستان کو معاشی و عسکری دہشت گردوں سے نجات دلوانے کیلئے ہے۔انہوں نے کہا کہ 17 جون 2014 ء کے دن دہشتگرد حکمرانوں نے ہمارے کارکنوں کو جس طرح خون میں لت پت کیا میں اسے کسی صورت نظر انداز نہیں کر سکتا ۔شہداء کے ورثاء کو انصاف سے محروم کرنے والے اپنے انجام سے دور چار ہونے والے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ مذکورہ بالا احتجاجی جلسوں میں قوم کو بتائیں گے کہ کس طریقے سے آل شریف نے پاکستان کو تباہی کے دہانے پر لاکھڑا کیا اورمنافع بخش قومی ادارے ذاتی نوکروں کے حوالے کر کے انہیں خسارے والے ادارے بنایا اور پھر کس طریقے سے قومی دولت کو بیرون ملک منتقل کیا یہ سارے حقائق قوم کے سامنے لا رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ پانامہ لیکس کے انکشافات کرپشن کے سمندر کا ایک قطرہ ہیں۔ ابھی بہت سارے حقائق اور انکشافات منظر عام پر آنے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں ایک بار پھر حکمرانوں کو خبردار کررہا ہوں کہ ہمارے پرامن احتجاج کے راستے میں رکاوٹ ڈالی گئی تو پھر حکمران 2014 ء کے دھرنے کو بھی بھول جائینگے۔

عوامی تحریک

مزید : صفحہ آخر


loading...