مقامی حکومتوں کی تشکیل کیلئے مخصوص نشستوں پر نیا انتخابی شیڈول جاری نہ کرنے کیخلاف درخواست پر الیکشن کمیشن کے ذمہ دار افسر اور فریقین کے وکلاء مزید بحث کیلئے طلب

مقامی حکومتوں کی تشکیل کیلئے مخصوص نشستوں پر نیا انتخابی شیڈول جاری نہ کرنے ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب میں مقامی حکومتوں کی تشکیل کے لئے مخصوص نشستوں پر نیا انتخابی شیڈول جاری نہ کرنے کے خلاف دائر درخواست پر الیکشن کمیشن کے ذمہ دار افسر اور فریقین کے وکلاء کو مزید بحث کے لئے طلب کر لیاہے۔چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس سید منصور علی.شاہ نے کیس کی سماعت کی، مسلم لیگ (ق )کے وکیل مبین الدین قاضی نے موقف اختیار کیاکہ مقامی حکومتوں کے قانونی ترامیم واپس لینے کے باوجود الیکشن کمیشن نے پرانا انتخابی شیڈول جاری کر دیا۔ پرانا قانون بحال ہونے کی بناء پر مخصوص نشستوں کی تعداد میں کمی ہو چکی ہے جس کی وجہ سے پہلے سے جاری کردہ انتخابی شیڈول قانونی طور پر غیر موثر ہو چکا ہے۔انہوں نے کہاکہ مقامی حکومت کے قوانین میں بار بار کی تبدیلیوں کے سبب اور نیاانتخابی شیڈول جاری نہ ہونے سے سیاسی جماعتوں کے امیدوارمقامی حکومتوں کے انتخابات میں حصہ نہیں لے سکیں گے جو جمہوری اصولوں اور بنیادی حقوق کی سنگین خلاف ورزی ہے۔انہوں نے استدعا کی کہ مقامی حکومتوں کی تشکیل کے لئے مخصوص نشستوں پر انتخاب کے لئے نیا انتخابی شیڈول جاری کرنے کا حکم دیا جائے۔الیکشن کمیشن کے نمائندے نے عدالت کو آگاہ کیا کہ جن امیدواروں کے کاغذات نامزدگی جمع ہو چکے ہیں انہی امیدواروں کو مقامی حکومتوں کے انتخابات میں حصہ کا استحقاق ہو گا جبکہ مخصوص نشستوں پرزائد ووٹ لینے والے امیدواران ہی ان نشستوں پر کامیاب قرار دئیے جائیں گے ،اس حوالے سے تمام ریٹرننگ افسران کو مراسلہ بھجوا دیا گیا ہے، عدالت نے کیس کی سماعت 17اگست تک ملتوی کرتے ہوئے الیکشن کمیشن کے ذمہ دار افسر اور فریقین کے کے وکلاء کو مزید بحث کے لئے طلب کر لیاہے ۔

مزید : صفحہ آخر


loading...