چین کا اقتصادی راہداری منصوبے پر کام کی رفتار پر اظہار اطمینان

چین کا اقتصادی راہداری منصوبے پر کام کی رفتار پر اظہار اطمینان

 بیجنگ(آئی این پی)چین کی ترقی و اصلاحات کی قومی کمیٹی کے ترجمان چوؤ چھین شی نے قتصادی راہداری منصوبے کی تعمیراتی سر گرمیوں پر اظہار اطمینان کرتے ہو کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری کا جائزہ لیا جائے تو پاکستان میں شاہراہ قرا قرم کے دوسرے مرحلے اور موٹر ویز کی تعمیراتی سر گرمیوں کا آ غاز کر دیا گیا ہے، اورنج لائن سمیت دیگر اہم منصوبوں پر بھی بنیادی نوعیت کے کام مکمل کر لیے گئے ہیں، ون بیلٹ ون روڈ کی تعمیر میں مختلف ممالک کی جانب سے اہم منصوبوں پر توجہ دینے سے مثبت نتائج حاصل ہوئے ہیں،چینی کاروباری اداروں نے ون بیلٹ ون روڈ کے آس پاس ممالک میں باہمی تعاون کے چھیالیس زونز قائم کئے ہیں۔ منگل کوچین کی ترقی و اصلاحات کی قومی کمیٹی کے ترجمان چوؤ چھین شی نے چائنہ ریڈیوانٹرنیشنل کوایک انٹرویو میں بتایا کہ ون بیلٹ ون روڈ کی تعمیر میں مختلف ممالک کی جانب سے اہم تعمیراتی منصوبوں پر توجہ دینے سے مثبت نتائج حاصل ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر پاک چین اقتصادی راہداری کا جائزہ لیا جائے تو پاکستان میں شاہراہ قرا قرم کے دوسرے مرحلے اور موٹر ویز کی تعمیراتی سر گرمیوں کا آغاز کر دیا گیا ہے۔جبکہ لاہور میں اورنج لائن سمیت دیگر اہم منصوبوں پر بھی بنیادی نوعیت کے کام مکمل کر لیے گئے ہیں۔ چوؤ چھین شی نے کہابنگلہ دیش ،چین ،بھارت اور میانمارکے درمیان اقتصادی راہداری کے حوالے سے مشترکہ جائزہ رپورٹ مکمل کر لی گئی ہے، اکیسویں صدی میں سمندری شاہراہ ریشم کی اگر بات کی جائے تو سری لنکا میں کولمبو بندر گاہ کی تعمیراتی سر گرمیاں بحال ہو گئی ہیں۔ترجمان نے مزید کہا کہ پیداواری صلاحیت میں اضافے کے لیے فریقین کے ساتھ تعاون کو فروغ دیا جا رہا ہے اور اب تک پیداواری صلاحیت سے متعلق باہمی تعاون کے مختلف منصوبوں کی مالیت ایک کھرب امریکی ڈالرز سے تجاوز کر گئی ہے۔چین کے کاروباری اداروں نے ون بیلٹ ون روڈ کے آس پاس ممالک میں باہمی تعاون کے چھیالیس زونز قائم کئے ہیں۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...