دیور کے ہاتھوں بھابی قتل، ٹریفک حادثات میں باپ بیٹا سمیت 5افراد جاں بحق، 2خواتین کی خودکشی

دیور کے ہاتھوں بھابی قتل، ٹریفک حادثات میں باپ بیٹا سمیت 5افراد جاں بحق، ...

خانیوال ‘ ساہوکا ‘ قطب پور ‘فتح پور‘جھوک اترا ‘ رحیم یار خان ( نمائندگان ) رنجشن پر دیورنے بھابھی قتل کر دی ‘ ٹریفک حادثات(بقیہ نمبر43صفحہ12پر )

میں باپ بیٹا سمیت 5 افراد جاں بحق ‘ 5 زخمی ہوگئے ‘ جبکہ حالات سے دلبرداشتہ ہوکر 2خواتین نے خودکشی کر کے زندگی کا خاتمہ کر لیا ۔ لودھراں سے نمائندہ پاکستان کے مطابق لودہراں کے نواحی علاقہ موضع کونڈی میں مختیار احمد کی شادی اپنی بھابھی کی بہن نسرین مائی سے ہوئی جس سے بعد میں طلاق ہو گئی تھی مختیار احمد کو شک تھا کہ اسکی بیوی کی طلاق اسکی بھابھی کنیز مائی نے کرائی ہے اسی رنجش کی بنا پر مختیار احمد نے 3oبور پسٹل سے فائرنگ کر کے کنیز مائی کو قتل کر دیا۔ خانیوال سے ڈسٹرکٹ رپورٹر کے مطابق مہر شاہ سے چک نمبر 176/10Rجانے والے موٹر سائیکل سوار محمد ریاض ولد محمد شریف سکنہ کچی پکی کو چک نمبر 171/10Rکے نزدیک سامنے سے آنے والی ٹریکٹر ٹرالی نمبری LDA 7215جو کہ ریت سے بھری ہوئی تھی نے روند دیا جس سے موٹر سائیکل سوار موقع پر ہی جا ں بحق ہو گیا ٹریکٹر ٹرالی ڈرائیور موقع سے فرار ہو گیا۔ فتح پور سے سٹی رپورٹر کے مطابق سوموار اور منگل کی درمیانی شب آدھی رات کے قریب ایم ایم روڈ پر فتح پور کے قریب رانا جہانزیب کمپنی کی ایک تیز رفتار بس نے اپنے سامنے جاتی ایک ٹریکٹر ٹرالی کو پیچھے سے خوفناک ٹکر ماردی جس سے ٹریکٹر ٹرالی میں سوار فتح پور کے نواحی گا ؤں چکنمبر 244ٹی ڈی اے کا غریب مزدور غلام قاسم چن اپنے بیٹے قیصر عباس سمیت جاں بحق ہو گیا جبکہ اسکا دوسرا بیٹا انصر عباس شدید زخمی ہو گیا جسے نشتر ہسپتال ملتان ریفر کر دیا گیا ہے،حادثے میں صحافی اقبال جگ سمیت پانچ مزید افراد محمد ریاض سکنہ 226ٹی ڈی اے، محمد توقیر سکنہ تونسہ شریف،ممتاز حسین سکنہ کوٹ ادو،عبد الجبار سکنہ 156ٹی ڈی اے بھی زخمی ہو ئے،اطلاع ملتے ہی ڈی سی او لیہ سید واجد علی شاہ بھی اے ڈی سی لیہ نعیم اللہ بھٹی،اسسٹنٹ کمشنر کروڑ تنویر یزداں خان،ڈسٹرکٹ ایمرجنسی سیفٹی آفیسر ڈاکٹر تسلیم اختر،و دیگر ریسکیو اہلکاروں،سرجن ڈاکٹر سید شوکت حسین‘ احسان اللہ سیال و دیگر کے ہمراہ ایمبو لینسزو گاڑیاں لیکر فتح پور پہنچ گئے جہاں انہوں نے اپنی زیر نگرانی زخمیوں کو ہسپتال سے طبی امداد دلوائی،اس موقع پر ایم ایس تحصیل ہیڈ کوارٹرز ہسپتال پلس ٹراما سنٹر فتح پور ڈاکٹر دلاور رندھاوا،ایس ایچ او فتح پور انسپکٹر وسیم لغاری،سب انسپکٹر حاجی افضل،سید الطاف شاہ،ڈاکٹر اعظم باگڑی،ڈاکٹر ملک عاصم بودلہ،چوہدری اشفاق، رمضان گجر،ملک مختار کھو کھر، چوہدری شا ہد گجر و دیگر بھی مو جو د تھے۔ڈی سی او لیہ نے حادثے بارے مکمل بریفنگ لی اور رات ایک بجے ایم ایس نشتر ہسپتال ملتان ڈاکٹر عاشق حسین ملک سے رابطہ کر کے انہیں ریفر ہو کر آنے والے زخمیوں کے خصوصی علاج معالجے بارے ہدایات دیں۔ جھوک اترا سے نمائندہ پاکستان کے مطابق جھوک اترا کے موضع حاجی کمند چاہ موچی والا کا رہائشی رحیم بخش بھٹی کے بیٹے محمد عمران ،محمد عرفان،محمد ارسلان جو کہ جھوک اترا میں مٹھائی کی دوکان پر کا کرتے ہیں جو دن بھر مزدوری کرنے کے بعد رات نو بجے کے قریب گھر جا رہے تھے زیر تعمیر جھوک اترا تا جکھڑامام شاہ روڈ پر چاہ کھنڈوا والا رستہ کے قریب کھڑیتار کول مشین جو کہ ٹھیکیدار نے اپنی غفلت کے باعث کھڑی کی تھی سامنے سے انے والی کار کو راستہ دیتے ہوئے سامنے کھڑی تار کول مشین سے ٹکرا گئے اور شدید زخمی ہو گئے‘ ریسکیو 1122کو دی جنہوں نے مو قع پر پہنچ کر ابتدائی طبی امداد کے بعد ٹراما سنٹر ڈیرہ غازیخان لے گئے ان تین بھائیوں میں سے سات سالہ محمد ارسلان زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گیا ابھی باقی دو بھائیوں کی حالت بھی خطرے میں ہے۔ رحیم یار خان سے بیورو نیوز کے مطابق بستی گھمن والی چک97 این پی کارہائشی 25سالہ صدام حسین اپنی موٹرسائیکل پر کام کے سلسلہ میں جار ہاتھا کہ اسی دوران سامنے سے آنے والی بے قابو ڈالہ ویگن نے کچل ڈالا جبکہ ڈالہ ویگن ڈر ائیور ڈالہ ویگن موقع پر چھوڑکر فرارہوگیا ۔ ساہوکا سے نمائندہ پاکستان کے مطابق داد جملیرا کے رہائشی محنت کش مقبول احمد ملاح کے اکلوتی بیٹی نے پسند کی شادی نہ ہونے پر زہر کھاکر زندگی کا خاتمہ کرلیا،متوفیہ(ک)کی چار روز قبل ساہوکا میں شادی کی گئی مگر وہ اپنی شادی پر رضا مند نہ تھی۔ قطب پور سے نامہ نگار کے مطابق حماد ٹاؤن موضع قطب پورکی خاتون شمشاد مائی کی شادی چکنمبر4میں حنیف اقوام جوئیہ سے ہوئی تھی ۔ایک ماہ قبل شمشاد مائی کی اکلوتی ا6 سالہ بیٹی دیوار ملبے تلے آکر جاں بحق ہو گئی تھی ۔جس کے بعد دونوں میاں بیوی کراچی محنت مزدوری کے لیے چلے گئے تھے ۔ابتدائی اطلاع کے مطابق 15اگست کی صبح شمشاد مائی نے اپنے شوہر کو بازار سے چاول چھولے لانے کو کہا ۔شوہر جب واپس لوٹا تو شمشاد مائی نے گلے میں پھندا ڈال کر چھت کے پنکھے سے لٹکی ہوئی تھی ۔لعش آنے پر اہم انکشافات متوقع ہیں ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...