تشدد سے حمل ضائع کرنے پرشوہر کے خلاف مقدمہ کے لئے مسیحی خاتون ہائی کورٹ پہنچ گئی

تشدد سے حمل ضائع کرنے پرشوہر کے خلاف مقدمہ کے لئے مسیحی خاتون ہائی کورٹ پہنچ ...
 تشدد سے حمل ضائع کرنے پرشوہر کے خلاف مقدمہ کے لئے مسیحی خاتون ہائی کورٹ پہنچ گئی

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)تشدد،حمل ضائع کرنے اور تیسری منزل سے نیچے گرانے کے الزام میں شوہر اور دیگر سسرالیوں کے خلاف فوجداری مقدمہ درج کروانے کے لئے مسیحی خاتون لاہور ہائیکورٹ پہنچ گئی۔عدالت نے مسیحی خاتون ثمن شریف کی درخواست پرخاتون کے خاوند، سمن آباد پولیس اور جناح ہسپتال انتظامیہ کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 7 ستمبرتک جواب طلب کرلیا ہے۔گزشتہ روز مسٹر جسٹس شہباز رضوی کی عدالت میں درخواست گزارکے وکیل رضوان ذکاگل نے موقف اختیار کیا کہ گھریلو جھگڑے پر درخواست گزار کے خاوند نعمان جاوید اور دیگر سسرالیوں نے حاملہ خاتون سمن شریف کو گھر کی تیسری منزل سے نیچے پھینک دیا،تیسری منزل سے گرنے پر خاتون شدید زخمی ہوئی اور 3 ماہ کاحمل ضائع ہوگیا اور ریڑھ کی ہڈی کوشدید نقصان پہنچا جس سے وہ چلنے پھرنے سے معذورہوگئی ہے۔تھانہ سمن آباد پولیس مقدمہ درج نہیں کررہی اورجناح ہسپتال انتظامیہ میڈیکل رپورٹ جاری نہیں کررہی۔عدالت نے ہسپتال انتظامیہ اور متعلقہ پولیس کے علاوہ خاتون کے شوہر کو بھی نوٹس جاری کردیئے ہیں۔

مزید : لاہور