غیر ملکی فنڈنگ کیس کارروائی روکنے کی درخواست مسترد ، تحریک انصاف کو 7ستمبر تک تفصیلات جمع کرانےکا آخری موقع

غیر ملکی فنڈنگ کیس کارروائی روکنے کی درخواست مسترد ، تحریک انصاف کو 7ستمبر ...

اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک 228 نیوز ایجنسیاں) الیکشن کمیشن نے غیر ملکی فنڈنگ کیس کی سماعت روکنے کے حوالے دے پی ٹی آئی کی درخواست مسترد کرتے ہوئے اسے سات ستمبرتک پارٹی فنڈز کی تفصیلات جمع کرانے کاآخری موقع دے دیا ہے ۔چیف الیکشن کمشنر جسٹس(ر) سردار محمد رضا کی سربراہی میں الیکشن کمیشن کے پانچ رکنی بنچ نے پی ٹی آئی پارٹی فنڈنگ کیس کی سماعت کی۔ سماعت کے دوران پی ٹی آئی کے وکیل انور منصور پیش ہوئے اور الیکشن کمیشن میں نیا جواب دائر کردیا۔ درخواست گزار کے وکیل احمد حسن نے سماعت کے دوران اعتراض کیا کہ پی ٹی آئی کے جواب میں اب بھی فنڈز کی تفصیلات نہیں دی گئیں جس پر پی ٹی آئی وکیل نے بتایا کہ سپریم کورٹ میں پارٹی فنڈنگ کیس میں تفصیلات دی جاچکی ہیں، الیکشن کمیشن بھی سپریم کورٹ میں جاری کیس میں فریق ہے۔اس موقع پر الیکشن کمیشن کے رکن ارشاد قیصر نے ریمارکس میں کہا کہ آپ کو یہاں ہمیں پارٹی فنڈنگ کی تفصیلات پیش کرنی چاہئیں۔ پی ٹی آئی کے وکیل نے استدعا کی کہ سپریم کورٹ میں معاملہ زیرسماعت ہونے کے باعث الیکشن کمیشن اپنی کارروائی روک دے جس پر رکن الیکشن کمیشن ارشاد قیصر نے کہا کہ آپ کی استدعا یہی ہے کہ الیکشن کمیشن اپنی کارروائی روک دے، لہذا اس نکتے پر بحث سن لیتے ہیں۔پی ٹی آئی کے وکیل انور منصور نے جواب دیا کہ سپریم کورٹ نے پارٹی فنڈنگ کیس کی پوری تاریخ نہیں پوچھی تھی، الیکشن کمیشن نے پورا قصہ سپریم کورٹ میں بیان کردیا۔ شاید الیکشن کمیشن کے کسی رکن کے ذہن کے کونے میں تعصب ہو۔ چیف الیکشن کمشنر نے کہاکہ ہمارے کسی کونے میں ایسا نہیں، آپ کو لگ رہا ہے، ہم نے تو اپنا فیصلہ سپریم کورٹ کو بھیجا ہے۔ الیکشن کمیشن کے رکن ارشاد قیصر نے سوال کیا کہ کیس کی تفصیلات فراہم کرنے سے تعصب کا عنصر کیسے آگیا؟۔پی ٹی آئی کے وکیل نے کہا کہ سپریم کورٹ میں زیرسماعت مقدمے میں الیکشن کمیشن فریق بن چکا ہے، اب فریق ہوتے ہوئے کمیشن کو کارروائی آگے نہیں بڑھانی چاہیے۔ چیف الیکشن کمشنر نے استفسار کیا کہ سپریم کورٹ میں کیس کی تاریخ کب مقرر ہے۔ انور منصور نے بتایا کہ سپریم کورٹ عید کے بعد کیس کی سماعت کرے گی جس پر چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ بہتر ہوتا آپ سپریم کورٹ میں استدعا کردیتے کہ الیکشن کمیشن کو کارروائی سے روکا جائے ۔ پی ٹی آئی کے وکیل نے جواب دیا کہ آپ کہہ رہے ہیں تو میں سپریم کورٹ میں درخواست دے دوں گا جس پر چیف الیکشن کمشنر نے استفسار کیا کہ کیا آپ میرے کہنے پر درخواست دائر کریں گے؟ درخواست گزار کے وکیل احمد حسن نے کہا کہ سپریم کورٹ میں زیرسماعت حنیف عباسی اور ہمارے کیس کی نوعیت بالکل مختلف ہے۔ وکیل احمد حسن نے کہا کہ پی ٹی آئی نت نئے طریقے سے پارٹی فنڈنگ کی تفصیلات فراہم نہیں کررہی، اگر تفصیلات فراہم کردی جائیں تو معلوم ہوجائے گا کہ ممنوعہ ذرائع سے فنڈنگ لی گئی یا نہیں۔ ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی جانب سے کارروائی روکنے کی درخواست قابل سماعت ہی نہیں،تحریک انصاف کو پارٹی فنڈنگ کی تفصیلات فراہم کرنے کے 21 احکامات جاری کیے جاچکے ہیں لیکن آئے روز نئی درخواست دائر کرکے تفصیلات پیش کرنے سے بچنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ سماعت مکمل ہونے پرالیکشن کمیشن نے کارروائی روکنے سے متعلق پی ٹی آئی کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا اور بعدازاں درخواست کو مسترد کرتے ہوئے تحریک انصاف کو سات ستمبر تک پارٹی فنڈنگ کی تفصیلات فراہم کرنے کا آخری موقع دے دیا۔ الیکشن کمیشن نے غیر ملکی فنڈنگ کیس میں پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے سپریم کورٹ کے فیصلے تک کیس کو التواء کرنے کی درخواست مسترد کرتے ہوئے سات ستمبر تک جواب طلب کرلیا ۔چیف الیکشن کمشنر جسٹس سردار محمد رضا کی سربراہی میں پانچ رکنی بینچ نے پی ٹی آئی کے سابق رہنما اکبر ایس بابر کی جانب سے غیر ملکی فنڈنگ کے حوالے سے دائر پٹیشن کی سماعت کی ، انور منصور نے موقف اختیار کیا کہ اس طرح کا ایک کیس سپریم کورٹ میں بھی زیر سماعت ہے اور وہاں پر الیکشن کمیشن بھی فریق کی حیثیت سے موجود ہے ،سپریم کورٹ میں الیکشن کمیشن کی جانب سے جواب داخل کیا گیا ہے اور الیکشن کمیشن کے جواب پر تحریک انصاف نے دلائل مکمل کئے ہیں، فریق مخالف کے وکیل نے جوابی دلائل دیئے ہیں تاہم وہ حج پر چلے گئے ہیں اور وہاں سے واپسی پر، دلائل دینگے انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ پارٹی فنڈنگ کیس کی سماعت سپریم کورٹ کے فیصلے تک ملتوی کی جائے جس پر اکبر ایس بابر کے وکیل نے کہا کہ پی ٹی آئی کی جانب سے الیکشن کمیشن میں دائر پٹیشن اور سپریم کورٹ میں دائر مقدمے کو ملاا درست نہیں ہے ،پی ٹی آئی کی جانب سے گزشتہ کئی سال سے بیرونی فنڈنگ کیس کو التواء میں ڈالنے کی کوششیں کی جاتی رہی ہیں موجودہ التواء کی درخواست بھی اسی طرح کی کوشش ہے الیکشن کمیشن کو بیرونی فنڈنگ کے حوالے سے دائر پٹیشن کی سماعت کا مکمل اختیار ہے ۔

الیکشن کمشن

مزید : صفحہ اول