این اے 120ضمنی انتخاب، کاغذات کی جانچ پڑتال جاری، فیصل میر کے کلثوم نواز اور یاسمین راشد پر اعتراضات

این اے 120ضمنی انتخاب، کاغذات کی جانچ پڑتال جاری، فیصل میر کے کلثوم نواز اور ...

لاہور(نامہ نگار)حلقہ این اے 120 کے ضمنی انتخاب میں حصہ لینے والے امیدواروں کے کاغذات کی جانچ پڑتال کا مرحلہ دوسرے روز بھی جاری رہا۔الیکشن کمیشن کے دفتر میں دن بھر کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کیلئے سیاستدانوں کا تانتا بندھا رہا۔تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعظم میاں محمدنوازشریف کی نااہلی کے بعد این اے 120 کے ضمنی انتخاب کیلئے 65 امیدوار میدان میں ہیں، ریٹرننگ افسرنے کاغذات نامزدگی کی سکروٹنی کے دوسرے روز بھی امیدواروں کوطلب کر رکھا تھا، گزشتہ روزپیپلز پارٹی کے امیدوار عزیز الرحمن چن، پی ٹی آئی کے آجاسم شریف، اے این پی کے امیر بہادر خان لودھی، پیپلز پارٹی ورکرز کے سردار حر بخاری ، موو آن پاکستان کی روحی بانو کھوکھر، پاکستان جسٹس پارٹی کے ملک منصف اعوان، ملی مسلم لیگ کے محمد یعقوب شیخ، جماعت اسلامی اور آل پاکستان مسلم لیگ سمیت 30 امیدوار کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کیلئے آئے ہوئے تھے۔پیپلزپارٹی کے امیدوار فیصل میر نے بھی بیگم کلثوم نواز اور ڈاکٹر یاسمین راشد پر اعتراضات جمع کرا دئیے ہیں، فیصل میر کی جانب سے ن لیگ پر اعتراض کیا گیا ہے کہ مسلم لیگ نواز شریف کے نام پر رجسٹرڈ ہے ،اس جماعت کے نام پر (ن )لیگ کے امیدوار الیکشن نہیں لڑ سکتے۔انہوں نے کہاکہ سپریم کورٹ میں پاکستان تحریک انصاف کے خلاف غیرملکی فنڈنگ لینے کا کیس زیر سماعت ہے اور توقع ہے کہ کیس کافیصلہ تحریک انصاف کیخلاف آئے گا لہٰذا ڈاکٹر یاسمین راشد کے بھی کاغذات نامزدگی مسترد کئے جائیں۔اس موقع پرپیپلزپارٹی کے امیدوار عزیز الرحمن چن نے کہا کہ دھاندلی کا خواب دیکھنے والے اس خواب سے باہر آجائیں ،دھاندلی نہیں ہونے دیں گے۔این اے 120 کے ضمنی انتخاب میں موو آن پاکستان کی امیدوار روحی بانو کھوکھر نے کہا کہ وہ پی ٹی آئی اور لیگی خاتون امیدواروں کا ڈٹ کر مقابلہ کریں گی۔ملی مسلم لیگ کے امیدوار شیخ یعقوب نے کہا کہ نظریہ پاکستان کو اجاگر کرنے کیلئے انتخاب میں حصہ لینے کا فیصلہ کیا ہے اور گالم گلوچ کی سیاست ختم کرنا ملی مسلم لیگ کا مشن ہے۔پاکستان جسٹس کے امیدوار منصف اعوان نے کہا کہ الیکشن جیت کر کالا باغ ڈیم کی تعمیر کراناان کاخواب ہے۔

مزید : صفحہ آخر