تفتان بارڈر پر زائرین سے توہین آمیزرویہ مزید برداشت نہیں کرینگے‘ علامہ سبطین

تفتان بارڈر پر زائرین سے توہین آمیزرویہ مزید برداشت نہیں کرینگے‘ علامہ ...

ملتان (سٹی رپورٹر)شیعہ علما کونسل پنجاب کے صدر علامہ سید سبطین حیدر سبزواری نے کہا ہے تفتان بارڈر پر عراق اور ایران سے آنے والے زائرین کو سازش کے تحت بلاوجہ تنگ کیا (بقیہ نمبر40صفحہ12پر )

جارہا ہے۔ اس توہین آمیز رویے کو مزید برداشت نہیں کیا جائے گا۔ ہم نہیں چاہتے کہ ملک اور ریاست کے لئے مشکلات پیدا کریں۔بہتر ہے متعصبانہ رویہ تبدیل کیا جائے۔ ایک بیان میں انہوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ زائرین کا مسئلہ ناقابل برداشت حد تک اپنی انتہا کو پہنچ چکا ہے۔بار بار متوجہ کیا گیا مگر لگتا ہے کہ متعلقہ ادارے اور حکومتیں بے ہوشی میں ہیں، جنہیں شہریوں کے مسائل نظر نہیں آرہے۔ تفتان بارڈر پر پاکستان ہاوس کو زائرین کا قید خانہ بنادیا گیا ہے۔جہاں بیٹھنے کو جگہ ہے، پینے کو ٹھنڈاپانی اور نہ ہی بنیادی ضروریات زندگی کا سامان ، لوگ واش رومز کا پانی پینے پر مجبور ہیں۔خواتین اور بچوں کو قیدی بنا کر رکھا گیا ہے۔ٹرانسپورٹ مہیا نہیں کی جاتی۔ اور یہ رویہ جاتے اور آتے روا رکھا جاتا ہے۔شیعہ علما کونسل کے رہنما نے متنبہ کیا کہ ہمیں انتہائی اقدام پر مجبور نہ کیا جائے کہ حکومت کے لئے حالات سنبھالنا مشکل ہوجائے۔ زیارات کے لئے اس راستے کو جاری رکھیں گے اور کسی صورت پیچھے نہیں ہٹیں گے۔ حکومت زائرین کی واپسی اور ان کی سہولیات کا اہتمام کرے، اور مستقل بنیادوں پر اس مسئلے کو حل کیا جائے،جو کہ حکومت اور ریاستی اداروں کی ذمہ داری ہے۔ علامہ سبطین سبزواری نے چیف آف آرمی سٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ، وزیر داخلہ احسن اقبال اور وزیر اعلیٰ بلوچستان ثنا اللہ زہری سے مطالبہ کیا کہ وہ زائرین کے مسئلے کو ترجیحی بنیادوں پر حل کریں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر