پاکستان ہمارے قائدین کی جہد مسلسل کا ثمر ہے،ڈاکٹر شہلا وقار

پاکستان ہمارے قائدین کی جہد مسلسل کا ثمر ہے،ڈاکٹر شہلا وقار

مظفرآباد ( بیورورپورٹ) 14اگست 1947ء ؁ کو مملکت پاکستان معرض وجود میں آئی جو کہ نہ صرف ہمارے عظیم قائدین کی انتھک محنت اور جہدمسلسل کا ثمر ہے بلکہ اس کی بنیادوں میں لاتعداد شہداء کاخون شامل ہے جو کہ ہجرت کے وقت دشمن کا نشانہ بنے اور اس دن کی اہمیت و افادیت سے اپنی نئی نسل کو آشنا کرنا ہمارئے فرائض میں شامل ہے۔ آج کے دن ہم یہ عہد کرتے ہیں کہ پاکستان کی بقاء ،سلامتی اور خود مختاری کے لیے کسی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔ پاکستان کی بقاء میں ہی آزادکشمیر کی بقاء ہے۔ تحریک آزادی کشمیر کا بہتر اور منصفانہ حل اسی طور ممکن ہے جب پاکستان مستحکم اور مضبوط ہوگا۔ آزادکشمیر کا بچہ بچہ پاکستان کی بقاء اور افواج پاکستان کے شانہ بشانہ کھڑا ہے اور ہر طرح کی قربانی دینے کے لیے ہمہ وقت تیار ہے۔ ان خیالات کا اظہار سیکرٹری زراعت و امور حیوانات آزادحکومت ریاست جموں وکشمیر ڈاکٹر شہلا وقار نے 14اگست کے موقع پر جلال آباد پارک میں پرچم کشائی کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا تقریب میں ڈائریکٹر جنرل زراعت ڈاکٹر بشیر بٹ ، ڈائریکٹر ز ، ڈپٹی ڈائریکٹر ز اور محکمہ زراعت کے دیگر ملازمین نے شرکت کی۔ ڈاکٹر شہلا وقار نے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ کشمیریوں کے دل پاکستان کے ساتھ دھڑکتے ہیں کشمیری عوام آج کے دن یہ عہد کرتے ہیں کہ پاکستان کی بقاء و سا لمیت کے لیے کسی بھی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے پاکستان ہماری منزل ہے مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے پاکستان شروع دن سے مثبت /وکیل کا کردار ادا کر رہا ہے اور پاکستان نے ہمیشہ مسئلہ کشمیر کے حوالہ سے بڑے بھائی کا کردار ادا کیا ہے یہی وجہ ہے کہ کشمیری عوام اپنے مستقبل کے بہتر فیصلہ کے لیے پاکستان کی جدوجہد کو فخر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ اُنھوں نے مزید کہا کہ وہ دن دور نہیں جب پورے کا پورا کشمیر آزادہوگا اور اور پورے کشمیر کا الحاق پاکستان سے ہوگا۔ اس موقع پر سیکرٹری زراعت و امور حیوانات ڈاکٹر شہلا وقار نے پرچم کشائی کی۔ تقریب کا اختتام ملک پاکستان کی بقاء و سلامتی ،کشمیر کی آزادی کے لیے دعائیہ کلمات سے کیا گیا۔

 

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر