ہائی کورٹ بار ملتان کے صدر کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی ختم نہ کی تو وکلاءاحتجاجاً گرفتاریاں دیں گے ،لاہور بار کی دھمکی

ہائی کورٹ بار ملتان کے صدر کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی ختم نہ کی تو ...
ہائی کورٹ بار ملتان کے صدر کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی ختم نہ کی تو وکلاءاحتجاجاً گرفتاریاں دیں گے ،لاہور بار کی دھمکی

  

لاہور(نامہ نگار)لاہوربارایسوسی ایشن نے صدر لاہور ہائی کورٹ بار ملتان شیرزمان کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی ختم کرنے کامطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ شیرزمان کی گرفتاری کاحکم دیاگیاتوپنجاب بھرکے وکلاءاحتجاج کے طور پررضاکارانہ گرفتاریاں دیں گے۔

نوجوانوں کا لیڈر بننے والاعمران خان اصل میں ان کی صلاحیت سے حسد کرتا ہے:عائشہ گلہ لئی

ایوان عدل میں لاہوربارکے وکلاءکا صدرملتان بارشیرزمان سے اظہاریکجہتی کے لئے اجلاس منعقدہوا ۔لاہور بار ایسوسی ایشن کے صدر چودھری تنویر اختر سمیت دیگر عہدیداران نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عدلیہ کو تالے لگانا ماورائے آئین اقدام ہے جس کی شدید مذمت کرتے ہیں، انہوں نے کہا کہ ججز وکلاءتنازع کو احسن انداز سے حل کرنے کی بجائے توہین عدالت کی کاروائی مناسب نہیں، اگر شیر زمان کی گرفتاری کا حکم دیا گیا تو پنجاب بھر کے وکلاءرضاکارانہ طور پر گرفتاریاں دیں گے۔لاہور ہائیکورٹ بار کے سیکرٹری عامر سعید راں نے کہا کہ وکلاءججز تنازع کو مصالحتی کمیٹی کے سپرد کیا جائے تاکہ تنازع کا باعزت حل نکالا جاسکے ۔انہوں نے بتایا کہ اس سلسلے میں لاہور ہائی کورٹ میں متفرق درخواست بھی دائر کردی گئی ہے ۔سابق سیکرٹری سلیم لادھی، اشتیاق اے خان، کلیم جاوید، اظہرچوہان، اظہر لطیف، ممبر پنجاب بار کونسل رانا انتظارحسین اور چودھری اکرم سمیت دیگرنے بھی اجلاس سے خطاب کیااورتنازعہ احسن انداز سے حل کرنے پر زور دیا۔اجلاس میں کثرت رائے سے قراردادمنظورکی گئی کہ شیرزمان کودیاگیاتوہین عدالت کانوٹس واپس لیاجائے اورعدالتوں کی مارکنگ برانچ کو تالے لگانے کی روایات ختم کی جائیں جبکہ اجلاس میں وکلا ءکی جانب سے توہین عدالت کے نوٹس پر سخت تنقید کی اور نعرے بازی بھی کی گئی ۔اجلاس لاہور بار کے صدر چودھری تنویر اختر کی زیرصدارت منعقد ہوا جس میں بار کے نائب صدر نوید چغتائی، عرفان تارڑ،سیکرٹری فرحان مصطفی ،فیصل اعوان ،عالیہ عاطف ، شاہد بھٹی اورپنجاب بار کونسل کے عہدیدار اوردیگروکلاءشریک ہوئے۔

مزید : لاہور