ایڈیٹر ’’نقوش‘‘ جاوید طفیل کا انتقال پر ملال

ایڈیٹر ’’نقوش‘‘ جاوید طفیل کا انتقال پر ملال

موقر جریدے ماہ نامہ ’’نقوش‘‘ کے بانی محمد طفیل (مرحوم) کے بڑے صاحبزادے اور ایڈیٹر نقوش محمد جاوید طفیل انتقال کرگئے، ان کو میانی صاحب قبرستان میں ان کے والد کے پہلو میں سپرد خاک کیا گیا، جاوید (مرحوم) پاکستان رائٹرز گلڈ کے جنرل سیکرٹری اور ادبی دنیا کی جانی پہچانی شخصیت تھے۔ محمد طفیل (مرحوم) کی ادبی کاوشوں کا ذکر ہو تو ان کے نام کے ساتھ ’’نقوش‘‘ آتا ہے، دونوں لازم و ملزوم تھے،بلکہ ان کو محمد طفیل نقوش کہہ کر پکارا جاتا تھا، انہوں نے اس جریدے کو بہت اعلیٰ مقام دیا اور زبردست محنت کرکے قرآن نمبر، رسولؐؐ نمبر ، لاہور نمبر اور کئی دوسرے موضوعات پر معلومات افزا نمبر نکالے، قرآن نمبر ان کی بہت بڑی کاوش تھی، ’’طفیل نقوش‘‘ کی وفات کے بعد اس کی اشاعت کو دھچکا ضرور لگا لیکن جاوید طفیل نے والد کی جگہ اسے سنبھال لیا اور قران نمبر کی تکمیل کے بعد اسے شائع بھی کیا، وہ اس کے دوسرے حصے کی تیاری میں مصروف تھے، جو قریباً تکمیل پا چکا ۔جاوید نے اپنے والد کی وراثت کا حق ادا کیا۔ ادب اور نقوش کے ساتھ پرنٹنگ کے شعبے کو بھی سلامت رکھا۔ ادبی حلقوں میں کم گو اور سنجیدہ فکر مشہور تھے۔ رائٹرز گلڈ کے جنرل سیکرٹری کی حیثیت سے بھی ادب اور ادیبوں کی بہبود کے لئے کام کیا۔ ان کے ماموں بابو جاوید بھی صوفی ادب اور صوفی ازم سے تعلق رکھتے اور بزم باہو کے بانی صدر ہیں۔ جاوید طفیل کی وفات پر ادبی حلقوں میں دکھ اور افسوس کا اظہار کیا گیا اور ان کی خدمات کو سراہا گیا، نماز جنازہ اور رسم قل کی تقریب میں اہم شخصیات نے شرکت کی، مرحوم کے چھوٹے بھائی بھی ان کے ساتھ پرنٹنگ کے شعبے میں ہی تھے، ان سے یہ توقع کی جاتی ہے کہ وہ نقوش کو زندہ رکھیں اور آخری نمبر کو جلد مکمل کرکے شائع کریں۔ ادارہ پاکستان پسماندگان اور عزیز و اقارب کے غم میں شریک ہے اللہ مرحوم کی مغفرت فرمائے۔

مزید : رائے /اداریہ