21ویں صدی کے چیلنجز کا مقابلہ کرنے کیلئے نوجوانوں کو معیاری تعلیم و تربیت دینا ہوگی، ڈاکٹر حسن عسکری

21ویں صدی کے چیلنجز کا مقابلہ کرنے کیلئے نوجوانوں کو معیاری تعلیم و تربیت ...

لاہور(این این آئی) نگران وزیراعلیٰ پنجاب ڈاکٹر حسن عسکری نے کہا ہے کہ 21ویں صدی سائنس اور ٹیکنالوجی کی صدی ہے اور21ویں صدی کے چیلنجز کا کامیابی سے مقابلہ کرنے کیلئے نوجوانوں کو معیاری تعلیم و تربیت فراہم کرنا ہوگی اوریہ وقت کا اولین تقاضاہے۔ ایک بیان میں نگران وزیراعلیٰ نے کہا کہ کسی بھی ملک کی ترقی میں نوجوانوں کا کردار کلیدی ہوتا ہے اورنوجوانوں کو بااختیار بنائے بغیر ترقی و خوشحالی کے اہداف کا حصول ممکن نہیں اوراس ضمن میں صرف معیاری تعلیم کے ذریعے ہی نوجوانوں کوبااختیاربنایا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک خوش قسمت ملک ہے جس کی 60 فیصد آبادی نوجوانوں پر مشتمل ہے اور نوجوان پاکستان کا تابناک مستقبل ہیں، جنہیں معیاری تعلیم، سکل ڈویلپمنٹ اور دیگر فنی علوم سے آراستہ کرکے اپنے پاؤں پر کھڑا کیا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ نوجوانوں کو با اختیاربنانا ان کا حق ہے۔ انہوں نے کہا کہ نوجوانوں کو بااختیار بنانے کیلئے سکل ڈویلپمنٹ کے شعبے میں بے پناہ گنجائش موجود ہے، لہٰذاسکل ڈویلپمنٹ کے سیکٹر میں نوجوانوں کی زیادہ سے زیادہ کھپت کیلئے انفرادیت اورجدت کے ساتھ آگے بڑھنا ہوگا اور اس ضمن میں نوجوانوں کو مارکیٹ کی ضروریات کے مطابق ہنرمند بنانے پر خصوصی توجہ مرکوز کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ نوجوان حقیقی معنوں میں عملی میدان میں آگے بڑھیں گے تو ہی ملک کی ترقی اور خوشحالی کیلئے عملی طور پر حصہ لیں گے اور میں سمجھتا ہوں کہ نوجوانوں کو مقامی و بین الاقوامی مارکیٹ کی ضروریات کے مطابق معیاری تعلیم دے کر اورہنر سکھا کر ان کی صلاحیتوں سے بھرپور فائدہ اٹھایا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے نوجوان انتہائی باصلاحیت، ذہین اور بھرپور اہلیت رکھتے ہیں۔ نوجوانوں کوبااختیاربنانے کیلئے وسائل اورمواقع فراہم کرنا حکومت کیساتھ نجی شعبہ کی بھی ذمہ داری ہے۔ نگران وزیر اعلیٰ نے کہا کہ نوجوانوں کو جدید دور کے تقاضوں سے ہم آہنگ کرنا وقت کی ضرورت ہے۔ مسائل کا بروقت ادراک کرتے ہوئے منفرد سکیمیں متعارف کرائی جانی چاہئیں۔

حسن عسکری

مزید : صفحہ آخر