غلط انجکشن سے ہلاکت ،نجی ہسپتال کا چیئرمین اور ڈاکٹر 19اگست کو طلب

غلط انجکشن سے ہلاکت ،نجی ہسپتال کا چیئرمین اور ڈاکٹر 19اگست کو طلب

لاہور(نامہ نگار)غلط انجکشن سے مریض شہباز کی مبینہ ہلاکت کے کیس میں صارف عدالت کے جج قمر اعجاز نے باجوہ ہسپتال جی ٹی روڈ کے چیئرمین اور ڈاکٹر نعیم کو 19اگست کوطلبی کے نوٹس جاری کردیئے ہیں ۔ صارف عدالت میں شاہدرہ کی رہائشی خاتون نجمہ بی بی نے نجی ہسپتال کے چیئرمین اور ڈاکٹر نعیم کے خلاف 5کروڑ روپے ہرجانے کا دعویٰ دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا ہے کہ اس کا شوہر شہباز بلڈ پریشر کا مریض تھا بلڈ پریشر زیادہ ہونے پر اسے جی ٹی روڈ پر واقع باجوہ ہسپتال پہنچایا گیا، جہاں ڈاکٹر نعیم کے بغیر تشخیص کے ٹیکہ لگا نے سے اس کی حالت بگڑ گئی،پھر اسے اپنے دوسرے ہسپتال علامہ اقبال ٹاؤن لے جایاگیا جہاں اس کی موت واقع ہو گئی، اس کے خاوند کی موت چیئرمین ہسپتال اور ڈاکڑ نعیم کی مبینہ غفلت کی وجہ سے ہوئی۔ عدالت سے استدعا ہے کہ 5 کروڑ روپے ہرجانہ اور 2لاکھ روپے اخراجات کے دلوائے جائیں۔

مزید : علاقائی