کنٹریکٹ پٹواریوں کو 31 اگست تک واپس بھجوانے کا تحریری نوٹیفکیشن جاری

کنٹریکٹ پٹواریوں کو 31 اگست تک واپس بھجوانے کا تحریری نوٹیفکیشن جاری

  

لاہور (عامر بٹ سے) قربانی سے پہلے قربانی بورڈ آف ریونیو پنجاب نے ضلع لاہور میں شعبہ سٹیلمنٹ کے لئے بھرتی کیے جانے والے کنٹریکٹ پٹواریوں کو 31 اگست تک واپس بھجوانے کا تحریری نوٹیفکیشن جاری کردیا، ذرائع کے مطابق 2002ء سے لے کر 2004ء کے دوران ضلع لاہور میں آگ لگ جانے کے باعث ریونیو ریکارڈ کی واپسی بحالی اور ریکارڈ کو اصل حالت میں مرتب کرنے کے لئے محکمہ ریونیو میں شعبہ سٹیلمنٹ وجود میں آیا اور 16 سے زائد شعبہ سٹیلمنٹ کے پٹواریوں کو باقاعدہ ایک تحریری معاہدے کے تحت کنٹریکٹ بیس پر بھرتی کرلیا گیا تاہم چند دن کی مہمان گورنمنٹ نے جاتے جاتے قربانی سے پہلے قربانی کر ڈالی اور شعبہ سیٹلمنٹ کے ان عارضی پٹواریوں کی واپسی اور شعبہ سٹیلمنٹ کو ضلع لاہور میں ختم کیے جانے کے تحریری نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا ہے، نوٹیفکیشن کے مطابق 31 اگست سے قبل ہی سٹیلمنٹ کے پٹواریوں کو ان کے اضلاع میں واپس بھجوا دیا جائے، بورڈ آف ریونیو کے جاری کردہ نوٹیفکیشن نے پٹواریوں کے چہرے بھی مرجھا دیے ہیں، اور پٹواری نگران سیٹ اپ سے نکلنے اور نئی حکومت کے جلد از جلد قائم کیے جانے کی دعائیں کررہے ہیں، نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بعض پٹواریوں کا کہنا تھا کہ بورڈ آف ریونیو کے پاس قانونی طور پر کوئی اختیار نہ ہے کہ جو محکمہ وزیراعلیٰ اور گورنر پنجاب کی منظوری سے قائم ہوا ہے اس کو بورڈ آف ریونیو کے سینئر ممبر یا کوئی بھی جوڈیشل ممبر ایک ایگزیکٹو لسٹ سے ختم کردے، ایسا اختیار بورڈ آف ریونیو کے پاس ہرگز نہ ہے، اور یہ نوٹیفکیشن بھی غیر قانونی ہے، دوسری جانب بورڈ آف ریونیو ترجمان کا کہنا ہے کہ اگر کسی پٹواری کو ہمارے اختیارات پر شک ہے تو وہ اس کو چیلنج کردے ہم جواب داخل کروائیں گے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -