خانیوال ، زہر یلے پانی کی سپلائی 2لاکھ سے زائد شہریوں پر خطرناک بیماریوں کا حملہ

خانیوال ، زہر یلے پانی کی سپلائی 2لاکھ سے زائد شہریوں پر خطرناک بیماریوں کا ...

  

خانیوال( نمائندہ پاکستان ) شہر میں گندے پانی کی سپلائی کے باعث 2 لاکھ سے زائد آبادی کا ہپاٹائٹس میں مبتلا ہونے کا انکشاف (بقیہ نمبر25صفحہ12پر )

ہوا ہے۔ ایک عرصہ سے شہریوں کو پینے کے لیے گندہ پانی گھروں میں سپلائی کیا جا رہا ہے سپلائی کی لائنوں کی مدتوں سے صفائی نہ ہونے کی وجہ سے پانی گندہ اور بدبودار ہو گیاہے ۔ تفصیلات کے مطابق خانیوال کی کالونی نمبر 1,2,3 شہری بلاکوں میں بلدیہ کی طرف ے گھروں میں پینے اور استعمال کرنے کے لیے سپلائی کیا جانے والا پانی گندہ ، بدبودار اور مضر صحت ہونے کی وجہ سے شہر کی 2 لاکھ سے زائد آبادی جلد اور جگر کی خطرناک بیماریوں میں مبتلا ہوگئے کالونی نمبر 3 کے اظہر کے گھر میں دیگر بعد دو بچے جگر کی بیماری میں مبتلا ہو کر موت کا شکار ہو گئے ۔ ان امراض میں مبتلا ہونے والوں میں خواتین بچے اور 18 سے کم عمر کے افراد شدید خطرناک حد تک پائی جاتی ہے کچھ عرصہ پہلے شفاف پانی کی سپلائی کے لیے حکومت پاکستان کی طرف سے این جی اوز کی اشتراک سے ان علاقوں میں پروجیکٹ پر کام ہوا لیکن نا معلوم وجوہات کی وجہ سے مکمل نہ ہو سکا۔ شہر انتظامیہ نے لاکھوں روپے واٹر فلٹریشن لگائیں لیکن ان پر توجہ نہ ہونے کی وجہ سے آئے دن بند رہتے ہیں ۔ شہری حلقوں نے حکومت پنجاب سے ڈی سی خانیوال اور چیئر مین بلدیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری طور پر گھروں میں سپلائی ہونے والے پانی کی لائینوں کو صاف کیا اور مرمت کی جائیں اور گھروں میں صاف پانی کی سپلائی کو یقینی بنایا جائیں۔

بیماریوں کا حملہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -