چارسدہ پولیس کی کارروائی ،قتل کیس اور رہزنی میں ملوث 6 ملزمان آلہ قتل سمیت گرفتار

چارسدہ پولیس کی کارروائی ،قتل کیس اور رہزنی میں ملوث 6 ملزمان آلہ قتل سمیت ...

چارسدہ (بیورو رپورٹ) چارسدہ پولیس کی بڑی کاروائی۔ دوہرے قتل کیس اور رہزنی میں ملوث چھ ملزمان آلہ قتل سمیت گرفتار۔ملزمان سے چھینی ہوئی رقم ، موبائل فونز اور چھینی ہوئی رقم برآمد۔ملزمان کا میڈیا کے سامنے اقرار جرم ۔تفصیلات کے مطابق ایس پی انوسٹی گیشن نذیرخان ، ڈی ایس پی فضل شیر خان ،ایس ایچ او تھانہ سرڈھیری افتخار خان ، سی آئی او حبیب الحسن نے پولیس سیکرٹریٹ میں ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کر تے ہوئے کہا کہ 29جولائی کو تھانہ سرڈھیری کے حدود سپین اراب کے قریب نامعلوم مسلح رہزنوں نے ناکہ لگا کر موٹر سائیکل پر شاہ ڈھند سے کلیاس جانیوالے ماموں بھانجے سلمان ولد سراج اور کامران ولدکریم کو زبر دستی روک لیا ۔رہزنوں نے ماموں اور بھانجے کو گن پوائنٹ پر موٹر سائیکل سے اتار ااور ان کو قریبی کھیتوں میں لے گئے ۔رہزنوں نے ماموں بھانجے سلمان اور کامران کے ہاتھ پاؤں باندھ کر دونوں سے نقدرقم ،موبائل فونز اور موٹر سائیکل چھین لئے اور اندھا دھند فائرنگ کرکے دونوں کو بہیمانہ انداز میں قتل کر دیا ۔29جولائی کو مقتول کامران کے بھائی وارث خان نے نامعلوم ملزمان کے خلاف دوہرے قتل کیس کا مقدمہ درج کیا ۔ اس حوالے سے ڈی پی او چارسدہ شہزد ندیم بخاری نے واقعہ کا سخت نوٹس لیتے ہوئے ایس پی انوسٹی گیشن نذیر خان کی سرابرہی میں ڈی ایس پی فضل شیر خان، ڈی ایس پی بشیر احمد ، ایس ایچ او افتخار خان ، سی آئی او حبیب الحسن اور فرانزک لیب کے انچارج جمال خان پر مشتمل ٹیم تشکیل دیکر واقعہ کے محرکات اور ملزمان کی جلد از جلد گرفتاری کی ہدایات جاری کئے ۔ ایس پی نذیر خان نے پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ پولیس کے ماہر ٹیم نے جدید سائنسی خطوط پر تفتیش شروع کر کے ایک ملزم دولت خان کو گرفتار کرکے تفتیش شروع کی جنہوں نے خونی واردات میں ملوث دیگر ملزمان پر ویز، خادم ، نصیب اللہ ، نذیر اور عبدالرحمان کے نام اگل دئیے جن کو بھی پولیس نے ڈرامائی انداز میں گرفتار کر لیا اور ان کے قبضے سے مقتولین سے چھینی ہوئی رقم ، دوہرے قتل میں استعمال ہونے والا اسلحہ اور موٹر سائیکل برآمد کر لیا ۔ اس موقع پر ملزمان نے میڈیا کے سامنے بھی اقرار جرم کیا اور ظلم اور بر بریت کی کہانی اپنی زبان سے سنا دی ۔ مقتولین کے بھائیوں سلمان اور کامران کے بھائیوں نے پولیس کی کار کر دگی پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا اور کہا کہ پولیس ٹیم نے مختصر مدت میں تمام ملزمان کو گرفتار کرکے قانون کی بالا دستی یقینی بنایا ۔ دوسری طرف مقتول کامران کے بھائی وارث خان نے کہا کہ ان کے بھائی کامران کی شادی کی تیاریاں مکمل تھی مگر ظالموں نے پورے خاندان کو غم میں مبتلا کیا اور آج بھی ان کی والدہ والدہ ، بہنیں اور بھائی صدمے کی وجہ سے بے ہو ش پڑے ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر