اسمبلی میں مہاجر حقوق پر خاموشی شرمناک ہے: ڈاکٹرسلیم حیدر

اسمبلی میں مہاجر حقوق پر خاموشی شرمناک ہے: ڈاکٹرسلیم حیدر

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)بانی صوبہ مہاجر تحریک ڈاکٹر سلیم حیدر نے کہا ہے کہ قومی اسمبلی میں مہاجر نمائندگی کے دعویداروں کی تقاریر سے مہاجروں کا سرشرم سے جھک گیا ہے۔ خالد مقبول صدیقی نے اپنی تقریر میں کراچی اور مہاجروں کا ایک مسئلہ بھی پیش نہیں کیا ، انہیں بلوچستان کے قوم پرست رہنماؤں شاہ زین بگٹی اور اختر مینگل کی جانب سے کی جانے والی تقاریر سے سبق حاصل کرنا چاہئے تھاکہ انہوں نے بلوچستان کے عوام اور بلوچوں کے مسائل کو پارلیمنٹ میں پیش کرکے اپنا حق ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ ایم کیوایم بہادرآباد یہ بتائے کہ اس نے پی ٹی آئی کی حکومت سے کیا معاہدہ کیا ہے اور کن مقاصد کیلئے اپنے ووٹوں کو استعمال کیا ۔ اس مرتبہ بھی پہلے کی طرح عوام کو دھوکہ دیا گیا ، یہ عناصر ہمیشہ مہاجر مفادات کا سودا کرتے رہے، ماضی میں بھی انہوں نے حکومتوں سے خفیہ معاہدے کئے ، جس کے سبب مہاجروں کو کچھ نہیں ملا ، جس سے ان کے چہرے بے نقاب ہوگئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ خالد مقبول صدیقی سے مہاجروں کو امید تھی کہ وہ مہاجروں کے دیرینہ مسائل کیلئے بات کریں گے لیکن نہ تو انہوں نے متروکہ سندھ کی بات کی ، نہ کوٹہ سسٹم ختم کرنے کی بات کی اور نہ ہی محصورین مشرقی پاکستان کے مسئلے پر اپنے لب کھولے۔ ان کی مجرمانہ خاموشی کی سزا ماضی میں بھی مہاجروں کو ملی اور اب بھی مہاجروں کو ملتی رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ تمام صورتحال مہاجروں کی آنکھیں کھول دینے کیلئے کافی ہیں۔ ہم برسوں سے یہ کہتے آرہے ہیں کہ یہ دودھ پینے والے مجنوں ہیں خون دینے والے نہیں، یہ صرف مہاجر نام کو استعمال کرکے اپنی جائیدادیں اور بینک بیلنس بنارہے ہیں ا نہیں مہاجرمسائل سے کوئی سروکارنہیں۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -