سیمنٹ فیکٹریوں کی جانب سے پانی کے غیر قانونی استعمال ،سپریم کورٹ نے سیکرٹری لوکل گورنمنٹ اور ڈی جی نیب کو طلب کر لیا

سیمنٹ فیکٹریوں کی جانب سے پانی کے غیر قانونی استعمال ،سپریم کورٹ نے سیکرٹری ...
سیمنٹ فیکٹریوں کی جانب سے پانی کے غیر قانونی استعمال ،سپریم کورٹ نے سیکرٹری لوکل گورنمنٹ اور ڈی جی نیب کو طلب کر لیا

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ نے سیمنٹ فیکٹریوں کی جانب سے پانی کے غیر قانونی استعمال کے معاملے میں سیکرٹری لوکل گورنمنٹ اورڈی جی نیب کو بھی طلب کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں بنچ نے سیمنٹ فیکٹریوں کی جانب سے پانی کے غیرقانونی استعمال کے معاملے کی سماعت کی ،کمپنیوں کے نمائندے اپنے وکلا کے ہمراہ عدالت میں پیش ہوئے۔

جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ 10لاکھ فی کیوسک یومیہ مقررہ قیمت کوہاتھ سے ماہانہ کردیاگیا۔

چیف جسٹس پاکستا ن نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ نوٹیفکیشن میں کس نے تبدیلی کی وہ سامنے آئے۔

عدالت نے کہا کہ پانی کی پہلے ہی قلت ہے،ایسے اقدامات سے ملک کوخشک کرناچاہتے ہیں؟۔

چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ لوگوں کے پاس پینے کا صاف پانی نہیں ہے،جسے استعمال میں لایا جا رہا ہے وہ پینے کا پانی ہے؟،آپ کی کمپنی کی وجہ سے کٹاس راج کا بیڑا غرق ہو گیا۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ سی پیک منصوبے کی تکمیل کیلئے سیمنٹ کمپنی بند نہیں کرناچاہتے۔

عدالت نے کہا کہ زیرزمین پانی کے استعمال سے منع کیا توقدرتی پانی کا استعمال شروع کردیاگیا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -پنجاب -لاہور -