”چھوڑیں گے نہ ہم کوشش تعمیر نشیمن“

”چھوڑیں گے نہ ہم کوشش تعمیر نشیمن“

  

زندہ قوموں کا شیوہ ہے کہ وہ اپنے وطن کے ذروں کو ستارے سمجھتی ہیں،حب الوطنی کا تقاضا پورا کرتی ہیں،وطن کی تعمیر و ترقی کے لیے اپنی جان داؤ پرلگا دیتی ہیں،اگر ہم صحیح معنوں میں اقبال کے شاہین ہیں تو ہم محنت اور لگن سے کام کریں گے۔ ملک خداداد پاکستان کا آنے والا دور حقیقی عظمت اور خوشحالی کا دور ہو گا،دشمن لاکھ سازشیں کر لے، بدعنوان عناصر اس کی لاکھ جڑیں کاٹیں ہم ایک ہیں کی تحریک کے ساتھ پاکستان کو دُنیا کی عظیم ترین اسلامی مملکت بنا کر ہی دم لیں گے۔گزشتہ دنوں ہمدرد نونہال اسمبلی کا اجلاس ”چھوڑیں گے نہ ہم کوشش ِ تعمیر ِ نشیمن“کے موضوع پر ہمدرد مرکز لاہور میں منعقد ہوا۔ اجلاس کی صدارت دفاعی تجزیہ کاربرگیڈیئر (ر)محمد سلیم نے کی جبکہ بچوں کے ہر دلعزیز فنکار المعروف ھامون جادوگر جناب حسیب پاشا صاحب بطور مہمان شریک ہوئے۔ نونہال مقررین میں علوینہ علی خان، طلحہ اشرف، سیمل رضا،محمد علی منصور،مریم نوید،ملک شاہ زیب اور عطیۃ الوکیل شامل تھے۔برگیڈیئر (ر)محمد سلیم نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اپنے اسلا ف کو مشعل راہ بنائیں، کیونکہ ہم نے بھی اپنے بڑوں سے سیکھا کہ باادب بانصیب۔بے ادب بے نصیب۔انہوں نے مزید کہا کہ اچھی تعلیم و تربیت انسان کی شخصیت میں عمدہ نکھار پیدا کرتی ہے۔اچھی تعلیم انسان کو تاریکی سے دور کرتی ہے، شعور بخشتی ہے اور اچھے بُرے کی تمیز سیکھاتی ہے۔ اسلام نے تعلیم کو زندگی کا لازمی جُز قرار دیا ہے۔ یہ ملک ہمارے بڑوں نے اسلام کے نام پر حاصل کیا تاکہ مسلمان آزادی سے اپنی روایات کے مطابق زندگی بسر کر سکیں، لیکن آج ایسا نہیں ہو رہا،لہٰذا آپ ہمارا مستقبل ہیں اپنے اسلاف کو اپنی زندگیوں میں نافذ کریں۔ انہوں نے بتایا کہ جب قائداعظم نے غازی علم دین شہید کو بچانے کی غرض سے کہا کہ غازی صاحب آپ کہہ دیں کہ قتل کے وقت ہوش میں نہ تھے تو غازی صاحب نے جھوٹ بولنے سے صاحب انکار کرتے ہوئے کہا کہ میں اصل میں اس وقت ہی تو بیدار تھا اور شہادت کے رتبہ کو ترجیح دی۔

محترم حسیب پاشا نے کہا کہ 14اگست کی آمد آمد ہے اللہ نے ہمیں دہری خوشیاں عطاء فرمائیں ہیں ایک یوم آزادی اور دوسری عیدالضحیٰ ہم نے ان خوشیوں کا احترام کرتے ہوئے کوشش کرنا ہے کہ کسی کی دِل آزاری نہ اور نہ بے ادبی ہو جیسے 14اگست اور عید میلاد النبی ؐ کی جھنڈیاں ہوتی ہیں کوشش کریں کہ یہ زمین پر نہ گرنے دیں اور عید پر صفائی ستھرائی کا خاص خیال رکھیں۔انہوں نے مزید کہا کہ ان خوشیوں میں آپ نے اپنے کشمیری بہن بھائیوں کو بھی یاد رکھنا ہے ان کے لئے بھرپور دعائیں کرنی چاہئیں اور یوم آزادی کو یکجہتی کشمیر کے طور پر منائیں اور ان کے ساتھ مکمل یکجہتی کا ثبوت دیں۔نونہال عطیۃ الوکیل نے کہا کہ ماہ رمضان کا آخری عشرہ لیلۃ القدر کی مبارک رات جمعتہ المبارک کے دن اللہ تعالیٰ نے ہمیں عظیم ترین تحفہ سے نوازا ہمیں نہیں بھولنا چاہئے مسلمانوں نے جان و مال قربان کئے،ہزاروں کی عصمتیں لٹ گئیں،سہاگ اجڑ گئے ننھے بچوں نے نیزوں کی انیوں پر اس پاک وطن کی مانگ سجائی،نونہال مریم نوید نے کہاکہ ہم نے نشیمن تو پالیا،مگر اب تعمیرِ نشیمن ہماری کوششوں کا محتاج ہے اہل وفا اسلاف کی ایمان افروز داستانوں میں آج تعمیر نشیمن پنہاں ہیں،نونہال سیمل رضا نے کہا کہ اگر صوبائی ولسانی تعصب کی چنگاریاں نہ بڑھکائی ہوتیں توآج بنگلہ دیش پاکستان کا حصہ ہوتا،کالا باغ ڈیم کب کا بن چکا ہوتا،نونہال محمد علی نے کہاکہ یہ دیس ہمارے پرکھوں کی امانت ہے،جو ہمیں آئندہ نسلوں تک بحفاظت منتقل کرنا ہے ہماری جان بے شک چلی جائے مگر یہ سبز ھلالی پرچم کبھی جھکنے نہ پائے،نونہال طلحہ اشرف نے کہا کہ یہ بات اقوام عالم پر واضح ہو چکی ہے کہ پاکستانی قوم بزدل نہیں نڈر ہے،دہشت گرد نہیں امن پسند ہے،منفی سوچ کی حامل نہیں،اداروں اور پختہ عزم کے ساتھ اپنے وطن کی تعمیر کی خواہش مند ہے۔ اجلاس میں کوئیز سیشن بھی رکھا گیا جس میں نونہالان کی حوصلہ افزائی کے لئے انعامات بھی تقسیم کئے گئے اوردلجوائی کے لئے فیس پینٹنگ اور کریکٹرز کا اہتمام کیا گیا،جبکہ اختتام پر حسب روایت تواضع کی گئی۔

مزید :

ایڈیشن 2 -