زندگیا ں بانٹنے والا زندگی کی بازی ہار گیا ، عظیم معالج ڈاکٹر فیصل مسعود انتقال کر گئے 

زندگیا ں بانٹنے والا زندگی کی بازی ہار گیا ، عظیم معالج ڈاکٹر فیصل مسعود ...

  

لاہور(جنرل رپورٹر)پاکستان کے مایہ نازو ممتاز معالج اور معروف پروفیسرآف میڈیسن ڈاکٹرفیصل مسعود جمعہ کے روزدل کا دورہ پڑنے سے انتقال کر گئے۔  ان کی نماز جنازہ آج جی بلاک ماڈل ٹاون کی جامع مسجد میں پونے ایک بجے ادا کی جائے گی وہ ڈا ریکٹر جنرل پنجاب ہیو من آرگن ٹرانسپلانٹ اتھارٹی میں تعینات تھے ان کی اچانک موت کی خبر شہر میں جنگل میں آگ کی طرح پھیل گئی،گزشتہ شام وہ اپنے کلینک واقع اکبر چوک پر معمو ل کے مطابق  آئے جہاں انھوں نے پہلے مریض کا معائنہ شروع کیا تھا کہ موت  کے فرشتے نے انہیں پہلے مریض کا معائنہ مکمل کرنے کی مہلت بھی نہ دی اور انھیں اچانک دل میں تکلیف ہوئی  انھیں فوری طور پر اقرا میڈیکل کمپلیکس لے جایا گیا جہاں ڈاکٹرز نے ان کی موت کی تصدیق کر دی بعد ازاں سمز اور سروسز ہسپتال کی انتظامیہ نے  اپنی ایمبولینس کے ذریعے ان کی میت شوکت  خانم ہسپتال کے سرد خانے میں رکھ دی پروفیسر فیصل مسعود کی موت کی اطلاع ملتے ہی سپریم کورٹ آف پاکستان کے سابق چیف جسٹس ثاقب نثار سمز کے پرنسپل پروفیسر ڈاکڑ محمود ایاز سروسز ہسپتال کے ایم ایس سلیم شہزاد اور دیگر پروفیسر ز ان کی رہائش گاہ پہنچ گئے وہاں ان کے شاگرد ایک دوسرے سے گلے لگ کر دھاڑیں مار کر روتے رہے پروفیسر ڈاکٹر فیصل مسعودکا تعلق ملتان سے تھا اور وہ نشتر مییڈیکل کالج کے گریجویٹ تھے انھوں نے بیرون ملک سے میڈیکل کی اعلی تعلیم حاصل کی ملک سے ڈینگی کا خاتمہ ان کے کرڈیٹ پر ہے وہ سمز کے بانی پرنسپل کا اعزاز بھی رکھتے ہیں سروسز ہسپتال اور سمزز کو ملک کا ایک ماڈل ادارہ بنایا سروسز کے اندر پہلا ڈایابیٹک سنٹر قائم کیا بعد ازاں ان کی اعلی خدمات کے اعتراف میں حکومت پنجاب نے انھیں کے ای ایم یو کا وائس چانسلر تعینات کر دیا جہاں انھوں نے شب وروز محنت کر کے  یونیورسٹی کو ایک ماڈرن اور معیاری یو نیورسٹی میں تبدیل کیا بعد ازاں ملک کے پہلے پنجاب ہیومن آرگن ٹرانسپلانٹ کے ڈی جی تعینات ہوئے گزشتہ روز وہ صبح آٹھ بجے معمول کے مطابق شادمان اپنے دفتر آئے دوپہر تک اپنے سرکاری فرائض اداکئے۔ جمعہ کی نماز ادا کی اور  بعد ازاں اپنی رہائش گاہ کی طرف روانہ ہو گئے وہاں اپنے کلینک میں نماز عصر کے بعد ہارٹ اٹیک ہوا جو جان لیوا ثابت ہوا اور آخر کار دنیا فانی کو چھوڑ کر جالق حقیقی سے جا ملے کلینک کے ملازمین کا کہناہے کہ ہارٹ اٹیک ہوتے ہی ان کی روح پرواز کر گئی  ایم ایس سروسز ڈاکٹر سلیم شہزاد چیمہ اور پرنسپل سمزز ڈاکٹر محمود ایاز نے کہا کہ پروفیسر فیصل مسعود شعبہ صحت کا ا ثاثہ تھے ان کی موت سے میڈیکل کا شعبہ ایک نایاب استاد اور معالج سے محروم ہو گیا  یو ایس ایچ کے وی سی ڈاکٹر جاوید اکرم نے کہا کہ فیصل مسعود ہمارے استا د تھے انھوں نے ہزاروں ڈاکٹر پیدا کئے وہ روشن ستارہ تھے صحت کے لیے ان کی خدمات ناقابل فراموش ہیں۔پاکستان کے مایہ ناز معالج ڈاکٹرفیصل مسعودیونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز اور کنگ ایڈورڈ یونیورسٹی آف میڈیکل سائنسز  میں بطور وائس چانسلر خدمات سرانجام دیتے رہے جبکہ سروسز انسیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز میں بطورپرنسپل بھی خدمات انجام دیں۔ڈاکٹر فیصل مسعود کا شمار پاکستان کے بہترین فزیشنزو سرجنز میں ہوتا تھا۔

فیصل مسعود

مزید :

صفحہ اول -