کچلاک دھماکے کے بعد پنجاب بھر میں سکیورٹی ہائی الرٹ کرنے کا حکم

کچلاک دھماکے کے بعد پنجاب بھر میں سکیورٹی ہائی الرٹ کرنے کا حکم

  

لاہور(کر ائم رپورٹر)انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب کیپٹن (ر) عارف نواز خان نے کوئٹہ کے علاقے کچلاک کی مسجد میں دھماکے کے بعد صوبے کے تمام اضلاع میں حساس مقامات اور عبادت گاہوں کی سیکیورٹی کو ہائی الرٹ کرنے کے احکامات جاری کردئیے۔ سی سی پی او لاہور سمیت تمام آر پی اوز،سی پی اوز اور ڈی پی اوز کوبھجوائے گئے وائرلیس پیغام میں آئی جی پنجاب نے ہدایت کہ تمام فیلڈ افسران اپنے اپنے اضلاع میں حساس اور اہم مقامات کی سیکیورٹی انتظامات کا جائزہ لینے کیلئے خود فیلڈ میں نکلیں جبکہ صوبے کے تمام اضلاع میں حساس مقامات اور دینی عبادت گاہوں کے گردو نواح میں سرچ، سویپ اور کومبنگ آپریشنز میں مزیدتیزی لائی جائے۔آئی جی پنجاب نے ڈولفن اور پیروسمیت تمام پٹرولنگ فورسز کے گشت کے اوقات کار بڑھانے کی ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ سیکیورٹی ڈیوٹی پر مامور اہلکار الرٹ ہو کر اپنے فرائض منصبی انجام دیں اور بین الاضلاعی اور بین الصوبائی چیک پوسٹوں پر نگرانی کا عمل مزید سخت کیا جائے۔مزید براں کیپٹن (ر) عارف نواز خان نے کہا ہے کہ پنجاب پولیس سروس ڈلیوری کو بہتر سے بہتر بنا کر ہی عوام میں اپنا امیج بہتر کرسکتی ہے لہذا تمام افسران و اہلکار شہریوں کے ساتھ خوش اخلاقی اور نرم گفتاری کو اپنا شعار بنائیں تاکہ پولیس اور عوام کے درمیان باہمی اعتمادکا رشتہ مزید بہتر اور مضبوط ہوسکے۔ انہوں نے مزید کہا کہ عوام کے مسائل انکی دہلیز پر حل کرنے کیلئے صوبہ بھر میں کھلی کچہریوں کے انعقاد میں مزید تیزی لائی جائے اور غریب، مستحق شہریوں کو درپیش مسائل کا حل ترجیحی بنیادوں پریقینی بنایا جائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے سنٹرل پولیس آفس میں عید ملن تقریب کے دوران افسران کو ہدایات دیتے ہوئے کیا۔

تقریب میں سی پی او کے تمام ایڈیشنل آئی جیز، ڈی آئی جیزاور اے آئی جیز سمیت متعدد فیلڈ افسران بھی موجود تھے۔ آئی جی پنجاب نے عید قربان، جشن آزادی اور یوم سیاہ پر صوبے کے تمام اضلاع میں سیکیورٹی کے فول پروف اور بہترین انتظامات یقینی بنانے پر پولیس فورس کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے افسران کو ہدایت کی کہ محرم الحرام کے دوران بھی بھرپور محنت اور خلوص نیت سے صوبے میں امن وامان کی فضا کو برقرا ر رکھا جائے اور سیکیورٹی انتظامات کے حوالے سے درپیش چیلنجز کے حوالے سے ابھی سے تیاری شروع کر دی جائے۔

مزید :

علاقائی -