تبدیلی کے نام اور جمہوریت کے لبادے میں مطلق العنان آمرانہ زہنیت مسلط ہے:سید نیئر حسین بخاری

 تبدیلی کے نام اور جمہوریت کے لبادے میں مطلق العنان آمرانہ زہنیت مسلط ہے:سید ...
 تبدیلی کے نام اور جمہوریت کے لبادے میں مطلق العنان آمرانہ زہنیت مسلط ہے:سید نیئر حسین بخاری

  


اسلام آباد(ڈیلی  پاکستان  آن لائن) پاکستان پیپلز پارٹی کےسینئررہنما  اور سابق  چیئرمین  سینیٹ سید نیئر حسین بخاری نے کہا ہے کہ’’تبدیلی‘‘کے نام اور جمہوریت کے لبادے میں ملک پر مطلق العنان  آمرانہ زہنیت مسلط ہے، غیر جمہوری سوچ کے حامل حکمرانوں کی پارلیمانی کارکردگی مایوس کن ترین اور قانون سازی نہ ہونے کے برابر رہے۔

 نجی ٹی وی کے مطابق حکومت کا  ایک سال مکمل ہونےپر اپنے  خیالات کا اظہار کرتے ہوئے سید  نیر حسین بخاری کاکہنا تھا کہ اہم ترین معاملات پرصدارتی آرڈینیسز کا نفاذ پارلیمنٹ کی بے توقیری ہے،حکومت کی ایک سالہ کارکردگی یہ ہے کہ بین الاقوامی معاہدات اور شرائط پارلیمنٹ سے مخفی ہیں ،سرکاری مداخلت کی وجہ سے اداروں میں توڑ  پھوڑ کی جا رہی ہے،ایک سال میں ملک  بیرونی قرضوں کی زنجیروں میں جکڑ دیا گیاہے اورخزانے کی کنجیاں آئی ایم ایف کے حوالے کر دی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ  73برس کی تاریخ میں پہلی بار اپنی شرائط پر آئی ایم ایف کی پاکستانی ٹیم سے بجٹ بنوایا گیا، گیس بجلی پٹرول قیمتوں میں کئی بار اضافہ سے شراکتی مافیا کو مالی مدد فراہم کی گئی،ڈالرکی قدر میں اضافہ سے انتخابی مہم مددگار مزید امیر ترین ہوئے، تبدیلی کے یہ مضر اثرات ہیں کہ روپے کی قدر میں کمی سے کئی ہزار ارب روپے قرض کا بوجھ پڑا ہے۔

انہوں نےکہا کہ جھوٹ پر مبنی عوامی فلاح و بہبود کے تمام نعرے پانی پر لکیر ثابت ہوئے، شہریوں کو سہولیات فراہمی کی بجائے روٹی اور روزگار چھین لیا گیا، تبدیلی یہ ہے کہ عوام الناس غربت کی سطح سے نیچے اور حکمران امارت کی مزید بلند سطح پر پہنچ گئے ہیں۔سید نیر حسین بخاری نے مزید کہا کہ تبدیلی سرکار کی وجہ سے صنعتی ترقی کاپہہ رکنے سے ہزاروں بے روزگار خاندانوں کے چولہے بند ہو چکے ہیں، تبدیلی پروگرام کے تحت چھت چھین کر  ہزاروں غریب لوگ بے  آسرا کئے گئے ہیں۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد


loading...