شیری مزاری کے بیان سے واضح ہوگیا کہ کشمیر پر حکومتی پالیسی، تقاریر اور ٹویٹر تک محدود ہے: سینٹرمصطفی نواز کھوکھر

شیری مزاری کے بیان سے واضح ہوگیا کہ کشمیر پر حکومتی پالیسی، تقاریر اور ٹویٹر ...
شیری مزاری کے بیان سے واضح ہوگیا کہ کشمیر پر حکومتی پالیسی، تقاریر اور ٹویٹر تک محدود ہے: سینٹرمصطفی نواز کھوکھر

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان  پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کے ترجمان سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا ہے کہ وفاقی وزیر شیری مزاری نے اپنی ہی حکومت کی لاک ڈاؤن خارجہ پالیسی کا اعتراف کر لیا ہے،شیری مزاری کے بیان سے واضح ہو گیا ہے کہ کشمیر پر حکومتی پالیسی، تقاریر اور ٹویٹر تک محدود ہیں۔

اپنے ایک بیان میں سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کو اجاگر نہ کرنا  صرف وزارت خارجہ کی نہیں بلکہ وزیراعظم کی بھی ناکامی ہے، قوم اور اپوزیشن تو جانتے ہی تھے کہ یہ حکومت ہر محاذ پر ناکام ہے،اب تو حکومت کی صفوں سے بھی حکومت کی ہر شعبے میں ناکامی کی آوازیں آرہی ہیں۔سینیٹر مصطفیٰ نواز کھوکھر نے کہا کہ عمران خان حکومت کی ناقص خارجہ پالیسی نے کشمیر کاز کو بڑا نقصان پہنچایا ہے،مسئلہ کشمیر تقریروں اور ٹویٹر سے نہیں بلکہ موثر اور مودبرانہ سفارتکاری سے اجاگر ہو سکتا ہے۔ سینیٹر مصطفی نواز کھوکھر کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت کو سفارتکاری کی الف ب کا بھی پتہ نہیں تو سفارتکاری کیسے کرتے؟ جب کشمیریوں کو ہمارے وزیر خارجہ کی ضرورت تھی تب وہ پارلیمنٹ میں اپوزیشن پر چڑھائی کر رہے تھے، اب قوم کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے لئے جذباتی تقریریں اور غلط بیانیاں کی جا رہی ہے۔ 

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -پنجاب -