شوبز شخصیات میں فلاحی کاموں میں حصہ لینے کا رحجان بڑھ گیا

 شوبز شخصیات میں فلاحی کاموں میں حصہ لینے کا رحجان بڑھ گیا

  

لاہور(فلم رپورٹر)شوبز سے وابستہ نامور شخصیات میں گزشتہ ایک سال کے دوران سماجی و فلاحی کاموں میں حصّہ لینے کا رجحان تیزی سے فروغ پا رہا ہے۔ ماضی میں ابرار الحق،جواد احمد،شہزاد رائے سمیت چند فنکار ہیں سماجی فلاح و بہبود کے کام کرتے ہوئے نظر آتے تھے۔اب بہت سارے فنکار غریبوں کی فلاح و بہبود کے کاموں میں مشغول نظر آتے ہیں۔ان دنوں کرونا وائرس کی وبا کے موقع پر بھی بہت سارے فنکار غریبوں کی مدد میں مصروف ہیں۔شوبز سے وابستہ جو شخصیات پاکستان میں لاک ڈاؤن کے دوران سماجی اور فلاحی کاموں میں پیش پیش ہیں ان میں میگھا،نشا خان،نوید جعفری،جواد احمد،ابرار الحق اور افتخار ٹھاکر کے نام نمایاں ہیں۔جبکہ چند نام نہاداداکاروں نے خود کو مصروف رکھنے کے لئے این اجی اوز بنالیں،سوشل میڈیا پر غریب فنکاروں کی امداد کے لئے چندہ مانگنا شروع کردیا،کرونا وائرس کی وجہ سے گھروں میں بیٹھے فنکاروں نے مصروفیت کا نیا کام ڈھونڈ لیاسوشل میڈیا پر اپنی این جی اوز بنالیں ان این جی اوز کے فیس بک پیجز بناکر عوام سے غریب فنکاروں کی مدد کے لئے مالی امداد کی اپیل کرنا شروع کردی۔ان دنوں مختلف اداکاروں نے غریب فنکاروں کی مدد کے لئے چندہ اپیل کی پوسٹیں بنا کر فیس بک پر شیئر کرنا شروع کردی ہیں جن پر ان غریب فنکاروں کو راشن دینے اور مالی امداد دینے کا کہا گیاہے ان پوسٹوں کے جواب میں لوگوں کا کہنا ہے کہ اس طرح اپیلیں کرنے کی بجائے جو فنکار مالی طور پر مستحکم ہیں اور انہیں غریب فنکاروں کا علم ہے تو وہ خود چپ چاپ جاکر ان کی مدد کردیں۔

 ان کے گھروں میں ایک ایک ماہ کا راشن ڈالنے کے ساتھ ساتھ ان کی مالی مدد بھی کردیں اس سے ان سے اللہ بھی خوش ہوں گے مگر اس طرح فیس بک پر خود کو مصروف رکھنے کے لیئے ایسی پوسٹیں لگانا وقت گزاری کا بہانہ لگ رہاہے اور ایسے اشتہارات اور پوسٹیں صرف اورصرف دکھاوے کے لئے لگائی جارہی ہیں۔ جو فنکار کرونا وائرس سے پہلے ہی سماجی فلاح و بہبود کے ادارے چلا رہے ہیں ان میں  نرگس نے غریب اور نادار خواتین کی امداد کیلئے ادارہ بنایا ہوا ہے ان کا کہناہے کہ وہ  اپنے ادارے کے تحت مستحق خواتین کی ہر ممکن مدد کریں گی۔کامیڈین طاہر نوشاد نے بھی غریب اور یتیم بچوں کی تعلیم کے حوالے سے کام شروع کیا ہوا ہے۔وہ ان بچوں کو جو کہ اپنے تعلیمی اخراجات پورے نہیں کرسکتے ان کیلئے کتابوں اور سٹیشنری کا بندو بست کرتے ہیں۔اس کے علاوہ میگھا،غزل شاہ،ڈریس ڈیزائنر شہزاد چندا،ایان شاہ وغیرہ بھی سماجی فلاح و بہبود کے ادارے چلا رہے ہیں۔شاہد حمید،شان،معمر رانا،شاہدہ منی،میگھا،اکرم اداس،مہک نورجاوید،عارف بٹ،عینی رباب،عروج،حمیرا،عاصم جمیلِ،آغا حیدر اور رضی خان کا کہنا ہے کہ ملک میں موجودہ صوررتحال بہت سنگین ہے کرونا وائرس کی وجہ سے دیہاڑی دار طبقہ بہت پریشان ہے کئی لوگوں کے گھروں میں فاقوں کی نوبت آچکی ہے ہم سب کو جو ممکن ہوسکے۔

 اپنے مجبور اور بے بس ہم وطنوں کیلئے کرنا چاہیے تاکہ دنیا اور آخرت میں سرخرو ہوسکیں۔

مزید :

کلچر -