اسرائیل کو تسلیم کرکے مسلم امہ کی پیٹھ میں چھرا گھونپاگیا، حافظ حسین احمد

  اسرائیل کو تسلیم کرکے مسلم امہ کی پیٹھ میں چھرا گھونپاگیا، حافظ حسین احمد

  

کوئٹہ(آئی این پی) جمعیت علماء اسلام کے مرکزی ترجمان و سابق سینیٹر حافظ حسین احمد نے کہا ہے کہ متحدہ عرب امارات کی جانب سے یہودیوں کی ناجائز حکومت اسرائیل کو تسلیم کرنا کوئی اچھنبے کی بات نہیں ہے  امریکہ کے احکامات کے تحت متحدہ عرب امارات نے فلسطینیوں اور مسلم امہ کی پیٹھ میں چھرا گھونپا ہے اپنی رہائشگاہ جامع مطلع العلوم میں جیکب آباد کے صحافیوں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے حافظ حسین احمد کا کہنا تھا کہ اس خطے میں یہودی اثر و نفوذ کے لیے جو پلان ترتیب دیا جارہا تھا شروع میں ہی اس کے آٖفٹر شاکس اسلامی ایٹمی قوت میں محسوس کئے جانے لگے اور جے یو آئی کے اس موقف کو اہمیت نہ دینے والے اب تمام پلان کو سمجھ چکے ہیں فرق صرف اتنا ہے کہ اب اوپننگ کے لیے کریز پر یو اے ای کو لاکھڑا کیا گیا ہے جبکہ اصل پلان اس کریز پر کسی تجربیکار ”کرکٹر“ کو لانے کا تھا، شاید یہ معاملہ وایا سعودی دوبارہ اس طرف کا رخ کرے گا اور اس کے لیے ہوم ورک کا سلسلہ 2018ء سے جاری ہے اور اس کی ذمہ داری ورلڈ بینک، آئی ایم ایف، امریکی وزارت خارجہ اور پینٹاگون کے حوالے ہے جبکہ یہاں پر کابینہ میں ڈالے گئے عناصر کی اکثریت ان کے مستعد رضاکار کے طورر پر حالات کو اس ڈگر پر لانے میں مصروف ہیں۔ جے یو آئی کے ترجمان نے کہا کہ اب ضروری ہوگیا ہے کہ تمام محب وطن اور فلسطینیوں و کشمیریوں کے کاز کے حامی سیاسی اور مذہبی جماعتیں آنے والے دنوں میں کسی غیر متوقع صورتحال کے لیے اپنی ریہرسل کا آغاز کردیں انہوں نے کہا کہ اب ضروری ہے کہ دوٹوک انداز میں پاکستان کی پارلیمنٹ اور تمام سیاسی جماعتیں نہ صرف پاکستانی عوام بلکہ امت مسلمہ کے تقاضوں، عقیدے اور سوچ کے ہم آہنگ پالیسی کا اعلان کریں اور اس پر اللہ کا نام لیکر ڈٹ کر اس صیہونی سازش کو ناکام بنادیں۔

حافظ حسین احمد

مزید :

صفحہ آخر -