اسرائیل کو تسلیم کرنے پر جماعت اسلامی کا یو اے ای کیخلاف شدید احتجاج، شہر شہر مظاہرے 

اسرائیل کو تسلیم کرنے پر جماعت اسلامی کا یو اے ای کیخلاف شدید احتجاج، شہر شہر ...

  

 ملتان،وہاڑی، بہاولپور، راجن پور، لودھراں، حاصل پور،سمہ سٹہ، روجھان، خانپور، کوٹ ادو، صادق آباد(سٹی رپورٹر، بیورو رپورٹ، نمائندگان پاکستان) متحدہ عرب امارات کی جانب سے اسرائیل کو تسلیم کرنے کیخلاف مذہبی وسیاسی جماعتوں کے زیراہتمام شہر شہر احتجاجی مظاہرے کئے گئے اور مظلوم فلسطینیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی منایا گیا اس حوالے سیملتان  سے سٹی رپورٹر کے مطابق جماعت اسلامی ملتان اور(بقیہ نمبر45صفحہ6پر)

 جماعت اسلامی لیبر ونگ کے زیراہتمام امیر جماعت اسلامی پاکستان کی کال پر ملتان میں یوم فلسطین کے موقع پر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا جس کی قیادت لیبر ونگ جنوبی پنجاب کے صدر مرذا عیسی اور جنرل سیکرٹری جماعت اسلامی ملتان اطہر عزیز نے کی مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی ملتان اطہر عزیز نے کہا کہ بیت المقدس مسلمانوں کا دل ہے عرب امارات نے مسلمانوں کے سینہ میں خنجر گھونپ کر اسرائیل کو تسلیم کیا لیکن امت مسلمہ فلسطین کے ساتھ اور عرب کے اس اقدام کی مذمت کرتی ہے اور حکومت پاکستان سے مطالبہ کرتی ہے کہ او آئی سی کا اجلاس طلب کیا جائے اور اسرائیل کے ناجائز وجود امریکی سامراجی سازش کو بے نقاب کیا جائے اس موقع پر لیبر ونگ جنوبی پنجاب کے صدر مرذا عیسی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اسرائیل جسے قائد اعظم نے قبول نہیں کیا اسرائیل جو فلسطین کی سلطنت پر اپنا ناجائز قبضہ رکھتا ہے جس کی اپنی کوئی ریاستی حیثیت موجود نہیں پاکستان کے عوام یہ سمجھتے مانتے ہیں کہ امریکہ بھارت اور اسرائیل کا گٹھ جوڑ مسلمانوں کے لیے خطرہ ہے جسے اب حکومت پاکستان کو سمجھنا ہوگا۔مظاہرہ میں اسرار حسین، عبدالرحمن حیدری اور صدر لیبر ونگ جماعت اسلامی ملتان حافظ عبد الرحمن نے بھی شرکت کی۔جبکہ عوامی نیشنل پارٹی کے زیر اہتمام امریکہ اسرائیل عرب امارات معا ہدے کے خلا ف ضلعی صدر اے این پی ملک عمر عبا س کی قیا دت میں چونگی نمبر ۹ پر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ اس مو قع پر ضلعی صدر عوامی نیشنل پا رٹی ملک عمر عبا س نے کہا کہ یو  اے  ای ۔ نے مسلمانوں کی پیٹھ میں چھراکھونپا جسے مسلم امہ برداشت نہیں کر ے گی عرب امارات نے اسرائیل کے ساتھ معاہدختم نہ کیا تو عرب امارات کا با ئیکاٹ کر ئے گے اور شدیداحتجا ج بھی کر یں گے جبکہ مظا ہرین کی جانب سے مظا ہر ے میں امریکہ عرب امارات او ر اسرائیل کا پر چم نظر آتش کیا۔مظا ہرین میں ملک وحید رجوانہ ملک ربنواز، سید طا ہر زیدی، محمد آصف سمیت دیگر عہد ران شریک تھے شرکا کا مزید کہنا تھا او ائی سی ہنگامی اجلا س بولا کر اعلا میہ مسترد کر ے عالمی برادری اسرئیل فلسطین تنازع کو حل کر نے کے لئے عالمی قوانین کی پاسداری کر ے۔ پاکستان کے ترجمان وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کو بھی عالمی فورم پر اس مسلۂ کو حل کر ے اور اپنی پوزیشن واضح کرے۔ مظا ہرین نے امریکہ،اسرائیل اور عرب امارات کے پوسٹر نظر آتش کئے۔ ادھر وہاڑی سے بیورو رپورٹ کے مطابق ملک کے دیگر شہروں کی طرح وہاڑی میں بھی جماعت اسلامی کے زیر اہتمام یوم القدس منایا گیا اس سلسلہ میں فیصل مسجد فیصل ٹاؤن سے عظیم الشان ریلی نکالی گئی ریلی کی قیادت ضلعی امیر جماعت اسلامی سید جاوید حسین شاہ نے کی ریلی میں عبدالخالق شاکر، راؤ خلیل احمد، انجینئر رفیق،مفتی حفیظ ظفر،قاری عارف عباس سمیت کثیر تعداد میں جماعت اسلامی اور جے آئی یوتھ رہنما و کارکنان شریک تھے ریلی شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے ضلعی امیر جماعت اسلامی سید جاوید حسین شاہ نے کہا کہ مقبوضہ بیت المقدس مسجد اقصیٰ مسلمانوں کا قبلہ اول ہے اس کی آزادی کیلئے تمام مسلمانوں کو مل کر کوشش کرنی چاہئے،امریکہ اور اسرائیل کی جانب سے مسلمانوں کو تقسیم کرنے کی سازش کی جارہی ہے ہمیں ان کی سازشوں سے بچنا چاہئے،اورمتحدہ عرب امارات کی جانب سے اسرائیل کو تسلیم کرنے کی مذمت کرتے ہیں یقینا اس فیصلہ سے دیگر دنیا کے مسلم ممالک سمیت فلسطینی بھائیوں کی بھی شدید دل آزاری ہوئی ہوگی دنیا کے تمام مسلمانوں کو متحد و منظم ہوکر اپنے قبلہ اول کو واپس لیناہے ان کا کہنا تھا کہ حکومت کسی صورت اسرائیل کو تسلیم کرنے کا اعلان نہ کرے ریلی سے دیگر مقررین نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیابہاولپور  سے ڈسٹرکٹ رپورٹر کے مطابقجماعت اسلامی کا فلسطنیوں سے اظہار یکجہتی اورعرب امارات اسرائیل معاہدہ کیخلاف بہاولپور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ،احتجاجی مظاہرے کی قیادت نائب امیر جنوبی پنجاب سید ذیشان اختر،امیر پی پی 245 نصراللہ ناصر،امیر پی پی 246 خالد بن جلیل نے کی۔احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے سید ذیشان اختر نے عرب امارات اسرائیل معاہد ے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ عالم اسلام کو تقسیم کرنے کی سازش ہے۔اسرائیل مغرب کا ناجائز بچہ ہے اس کو تسلیم کرنے کے بارے میں عالم اسلام کا کوئی ملک سوچ بھی نہیں سکتا۔ ٹرمپ نے آئندہ انتخابات میں کامیابی کیلئے صدی کی ڈیل کے نام پرعالم اسلام کو دو بلاکس میں تقسیم کرنے کا خطرناک کھیل کھیلاہے۔ٹرمپ مسلم امہ کے درمیان اتحاد و اتفاق کو ختم کرنے کیلئے کھلی دشمنی پر اتر آیا ہے۔حکومت فوری طور پر او آئی سی کا اجلاس بلائے اور یو اے ای سے معاہدہ ختم کرنے پر دباؤ ڈالا جائے۔انہوں نے کہا کہ فلسطین کی سرزمین اور قبلہ اول بیت المقدس مسجد اقصیٰ کسی عرب ملک یا عربوں کا مسئلہ نہیں بلکہ یہ مسئلہ پوری امت کا مسئلہ ہے، کسی عرب ملک یا ریاست کو ہر گز یہ حق حاصل نہیں ہے کہ وہ فلسطینی کاز اور فلسطین کے مظلوم مسلمانوں کیساتھ غداری کرتے ہوئے جارح اور قابض ظالم یہودی ریاست کو تسلیم اور ان کے تمام جرائم ومظالم کو قانونی طور پر تسلیم کرے۔نصراللہ ناصر نے متحدہ عرب امارات کی جانب سے اسرائیل کے ساتھ معاہدے کو امت مسلمہ کے اتحاد ویکجہتی پر کاری ضرب اور فلسطینی مسلمانوں کے پیٹھ میں چھرا گھونپنے کے مترادف قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ٹرمپ اپنی دوسری صدارتی مدت کنفرم کرنے کیلئے عرب ممالک خاص طور پر بادشاہی نظام والی ریاستوں کو ایران، ترکی اور دیگر شدت پسند تنظیموں کا خوف دلاکر،اپنی افواج کے ذریعے سے ان کی حکومتوں کو قائم رکھنے کی ضمانت فراہم کرکے اسرائیل کے ناجائز وجود کو تسلیم کرنے کیلئے بلیک میل کررہا ہے،عرب امارت کے اس اسلام اور مسلم دشمن فیصلے پر دیگر عرب ممالک خاص طور پر سعودی عرب کی مکمل خاموشی سوالیہ نشان ہے، امریکہ عربوں کے فیصلے کو پاکستان کی موجودہ کمزور حکومت پر بھی ٹھونسنے کی کوشش کرسکتا ہے،پرویز مشرف کے دور میں خورشید قصوری کی اسرائیلی وزیرخارجہ سے ملاقات اور درپردہ اسرائیلی ناجائز حکومت سے سفارتی تعلقات بھی اس سلسلے کی کڑی ہیں کہ جب عرب ممالک اسرائیل کو تسلیم کرلیں تب پاکستان بھی ان کی پالیسیوں کو فالو کرسکتا ہے،پاکستان پر قرضوں کا بوجھ، معاشی مجبوریاں اور دیگر مسائل کا بہانہ بناکر بڑے مالیاتی پیکیج کے بدلے میں اسرائیل کو تسلیم کرنے جیسا گھناؤنا کام کروایا جائے گا اسلئے پاکستان کے غیور اور جرت مند قوم کو چوکنا رہنے کی ضرورت ہے۔ راجن پور سے نامہ نگار کے مطابق اسرائیل کو تسلیم کرنا فلسطینوں کے ساتھ کھلم کھلا غداری ھے  جسے امت مسلمہ کبھی معاف نہیں کریگی  پاکستان  کے حکمران  ایسا سوچنے سے باز رھیں اسرائیل نیامریکہ کیذریعیمتحدہ عرب امارات پر دباؤ ڈال کر اسرائیل کو تسلیم کرنیپر مجبور کردیا ہم اس فیصلے کو تسلیم نہیں کرتے ان خیالات کا اظہار عبدالمالک قریشی امیر شہر جماعت اسلامی راجن پور،تحصیل امیرپروفیسر عبد الاحد رحمانی،"آواز دوست"کے سیکریٹری جنرل مشتاق رضوی اور پرائیویٹ سکولز ایسوسی ایشن کے ضلعی صدر بلال حسنی نے جماعت اسلامی کے زیر اھتمام مذمتی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس ریلی میں مختلف مکاتب فکر کے راہنماؤں اور شہریوں کی بڑی تعدادنے شرکت کی یہ ریلی دفتر جماعت اسلامی سے نکالی گء جس کی قیادت امیر شہر عبرالمالک قریشی،پروفیسر سید جمیل الدین نصیری عبدالمجید پٹھان ایڈوکیٹ،مفتی نثار بزمی اشرف بندیشہ اور  کامران کمال نی کی  یہ ریلی کشمیر چوک اور پاکستانی چوک سے گزرتے ہوئے ڈیمس گیٹ پر اختتام پزیر ھوئی آخر میں مفتی عبدالرؤف نے فلسطین اور کشمیر کی آزادی اور امت مسلمہ اور پاکستان کی سلامتی کے لئے دعابھی کرائی" لودہراں سے نمائندہ پاکستان کے مطابق امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق کی کال پر ملک بھر کی طرح  جماعت اسلامی لودھراں کے زیر اہتمام بھی متحدہ عرب امارات کی طرف سے اسرائیل کو تسلیم کرنے کے خلاف پریس کلب کے باہر احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔  احتجاجی مظاہرے سے ڈاکٹر سیدوحید احمد امیر جماعت اسلامی ضلع لودھراں،نائب امیر ڈاکٹر طاہر احمد چودھری،  خورشید احمد خان کانجو، نواب عمر حیات ایڈووکیٹ،محمد اسماعیل غوری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ فلسطین بیت المقدس انبیا کی وارث ہے، ہم کسی صورت انبیا کی وراثت کو اسرائیل کے حوالے نہیں ہونے دیں گے،انہوں نیحکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ او آئی سی کا اجلاس طلب کر کے متحدہ عرب امارات پر زور دے کہ وہ امت مسلمہ کو تقسیم ہونے سے بچانے کے لیے اسرائیل سے معاہدے پر نظرثانی کرے۔انہوں  نے کہا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دوبارہ انتخاب جیتنے کے لیے امت مسلمہ پر شب خون مارا ہے، مگر انھیں یاد رکھنا چاہیے کہ قبلہ اول، مسجد اقصی اور سرزمین فلسطین سے مسلمان اور فلسطینی کسی صورت دستبردار نہیں ہوں گے۔ یہ ہمارے ایمان کا حصہ ہے۔ مسجد اقصی نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا مقام اسرا و معراج ہے۔ اس پر اسرائیل کا ناجائز قبضہ ناقابل قبول ہے اور ناقبول رہے گا۔ لہذا امت مسلمہ اور پاکستانی عوام اور ہر انصاف پسند انسان اسرائیلی ریاست کو استحکا م دینے کے لیے اس سفارتی تعلقات کے معاہدہ کو مسترد کرتی ہے۔انہوں نے مذیدکہا کہ اسرائیل اور متحدہ عرب امارات کے سفارتی تعلقات پوری مسلم دنیا اور خصوصا عرب دنیا کے لیے بہت بڑا سانحہ ہے۔ متحدہ عرب امارات نے امریکی صدر کے دبا ؤمیں یہ فیصلہ کر کے لاکھوں فلسطینیوں کے خون اور ان کے مفادات سے بے وفائی کی ہے۔ جس سے خود عرب ممالک کے مفادات کو نقصان پہنچے گا۔ یہ امر باعث افسوس ہے کہ متحدہ عرب امارات قبلہ اول کی آزادی کے لیے جاری کوششوں کی مدد کرنے کے بجائے اسرائیل سے ہاتھ ملا رہا ہے۔ اسے اپنی کسی بھی سیاسی مصلحت یا عارضی مفادات کو دیکھنے سے پہلے یہ دیکھنا چاہیے تھا کہ بالآخر اس کے اسلامی دنیا پر کیا اثرات مرتب ہوں گے۔احتجاجی مظاہرہ میں جماعت اسلامی کے کارکنوں اسلامی جمعیت طلبہ جماعت اسلامی یوتھ،صحافیوں، سول سوسائٹی اور شہریوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔۔

ریلیاں 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -