نشتر یونیورسٹی کو اعلیٰ درجہ دلوائیں گے، پروفیسر ڈاکٹر اعجاز مسعود 

  نشتر یونیورسٹی کو اعلیٰ درجہ دلوائیں گے، پروفیسر ڈاکٹر اعجاز مسعود 

  

  ملتان (وقائع نگار) نشتر میڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر احمد اعجاز  مسعود نے کہا ہے کہ نشتر  میڈیکل یونیورسٹی کو ملک کے دیگر میڈکل یونیورسٹیوں کی طرح اعلی معیاری درجہ دلوانے کیلئے کوشش تیز کر دیں ہیں۔ سب سے پہلے  عسکری سیکورٹی گارڈز اور جنیٹوریل سٹاف کی دو ماہ کی تنخواہوں کی ادائیگی کر دی گئی ہے۔وزیراعظم پاکستان کی شجر کاری مہم میں نشتر یونیورسٹی و ہسپتال کے ملازمین بڑھ چڑھ کر حصہ (بقیہ نمبر2صفحہ6پر)

لے رہے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز صحافیوں سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کی ہے۔پروفیسر ڈاکٹر احمد اعجاز مسعود نے کہا ہے کہ ہسپتال کے اندر انتظامی ڈاکٹروں کے ماحول کو خوش گوار بنایا گیا ہے۔تاکہ احترام کا رشتہ قائم رہے۔تمام انتظامی عہدوں پر بیھٹے ڈاکٹرز کو چاہیے کہ وہ صرف یونیورسٹی و ہسپتال کی بہتری کیلئے کام کریں۔انہوں نے مزید کہا ہے کہ وائس چانسلر کا چارج ملنے کے بعد داؤد ہرکولیس کے تعاون سے 16 بستروں پر مشتمل ایک کووڈ آئی سی یو وارڈ کو  تشکیل دیا گیا ہے۔ جس میں مریضوں کو تمام طبی سہولیات فراہم کیں جائیں گی۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے بتایا کہ کورونا وائرس کا شکار ہونے والے سابق  وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر مصطفے کمال پاشا (شہید) کے نام سے لیکچر تھیٹر اور ڈاکٹر غزالہ (شہید) کے نام فارماکالوجی لیب کو منسوب کیا گیا ہے۔پروفیار احمد اعجاز مسعود نے کہا ہے کہ نشتر میڈیکل یونیورسٹی کی فیکلٹی کو ریگولر کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات کیئے جارہے ہیں۔جس کے بعد مذکورہ یونیورسٹی اپنی کامیابی کیں طرف گامزن ہو جائے گی۔انہوں نے کہا کہ 28 فروری سال 2020 میں نشتر میڈیکل یونیورسٹی کی جن خالی آسامیوں پر بھرتی کیلئے درخواستیں طلب کی گئی تھیں۔اب انکو جلد از جلد پراسس مکمل کرکے انٹرویو کیئے جائیں گے۔انہوں نے کہا ہسپتال میں کورونا کے شکار اور عام بیماریوں میں مبتلا  مریضوں کو بھرپور  طبی سہولیات فراہم کی جارہی یے۔ادویات کی فراہمی کیلئے گاہے بگاہے ہسپتال انتظامیہ سے میٹنگ کی جاتی ہے۔ڈاکٹروں کے مسائل سے چھٹکارہ ڈلوانے کیلئے کوشش کی جارہی یے۔اخر میں انہوں نے عوام اور نشتر ہسپتال ملازمین کو پیغام دیتے کہا ہے کہ ڈاکٹر مسیحا ہے۔جو مشکل گھڑی میں اپنی جان کی پرواہ کیئے بغیر مریضوں کو علاج معالجہ کی سہولیات دیتے رہتے ہیں۔کورونا وائرس کی وجہ سے کئی ڈاکٹروں نے اپنی جانوں کی نذرانہ دیا ہے۔ہمیں چاہیے ملک و قوم کی سلامتی کیلئے اللہ تعالی کی بارگاہ الہی میں دعا کریں۔عوام دوران علاج اپنے جذبات پر قابو رکھیں۔تاکہ ڈاکٹر اعتماد طریقے سے مریض کا علاج کرسکے۔۔

اعجاز مسعود

مزید :

ملتان صفحہ آخر -