توشہ خانہ ریفرنس میں طلبی کیخلاف درخواست پر سماعت،اسلام آبادہائیکورٹ نے نوازشریف کی ضمانت پر سوال اٹھا دیئے

توشہ خانہ ریفرنس میں طلبی کیخلاف درخواست پر سماعت،اسلام آبادہائیکورٹ نے ...
توشہ خانہ ریفرنس میں طلبی کیخلاف درخواست پر سماعت،اسلام آبادہائیکورٹ نے نوازشریف کی ضمانت پر سوال اٹھا دیئے

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آبادہائیکورٹ نے توشہ خانہ ریفرنس میں طلبی کیخلاف درخواست پر نوازشریف کی ضمانت پر سوال اٹھادیئے۔

نجی ٹی وی کے مطابق توشہ خانہ ریفرنس میں احتساب عدالت طلبی کیخلاف نوازشریف کی درخواست پر سماعت ہوئی،چیف جسٹس اطہر من اللہ کی سربراہی میں بنچ نے سماعت کی ،اسلام آبادہائیکورٹ نے نوازشریف کی ضمانت پر سوال اٹھا دیئے۔

چیف جسٹس اطہر نے استفسار کیاکہ اسلام آبادہائیکورٹ نے نوازشریف کو8 ہفتے کی ضمانت دی تھی اس کا کیاہوا؟،اگر آپ کی ضمانت کینسل ہے تو اس پر ملزم کا سٹیٹس کیا ہے؟۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ یہاں پر نوازشریف کی 2 اپیلیں زیرالتوا ہیں 8 ہفتے کی ضمانت کاکیاسٹیٹس ہے ؟،وکیل جہانگیر جدون نے کہاکہ ابھی ضمانت قائم ہے،پنجاب حکومت کو درخواست دی تھی ابھی آرڈر کاپی میرے پاس نہیں ۔

چیف جسٹس اطہر من اللہ نے استفسار کیا کہ کیاآپ کی وہ ضمانت ختم ہو چکی ہے ؟جسٹس عامر فاروق نے کہاکہ ہم نے پنجاب حکومت کو کہاتھا وہ ضمانت میں توسیع کامعاملہ دیکھے گی ،ملزم کی اس عدالت سے دی جانیوالی ضمانت غیرموثر ہو چکی ہے ۔

چیف جسٹس ہائیکورٹ نے کہاکہ اگرآپ کی ضمانت کینسل ہے تواس پر ملزم کاسٹیٹس کیا ہے؟،بظاہر اس عدالت کے فیصلے کی حدتک ملزم اشتہاری ہوچکا ہے ،وکیل نے کہاکہ پنجاب حکومت نے ضمانت میں توسیع دی تھی ابھی آرڈر کی کاپی میرے پاس نہیں ۔

جسٹس عامر فاروق نے کہاکہ نوازشریف کی ضمانت ہے یانہیں پہلے ہمیں یہ کلیئرکریں،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے کہاکہ نوازشریف کی سزاجومعطل کی تھی وہ برقرارہے یا نہیں یہ بتائیں اسلام آبادہائیکورٹ نے کیس کی سماعت20 اگست تک ملتوی کردی۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -