قیمتوں میں مصنوعی اضافے کیلئے ایل پی جی کی سپلائی روک دی گئی

قیمتوں میں مصنوعی اضافے کیلئے ایل پی جی کی سپلائی روک دی گئی

  

کراچی(آن لائن)مائع پٹرولیم گیس (ایل پی جی )درآمدکنندگان اور پروڈیوسرز نے مقامی مارکیٹ میں ایل پی جی کی قیمتوں میں مصنوعی اضافے کیلیے ایل پی جی کی سپلائی روک دی ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق عالمی سطح پر پٹرولیم مصنوعات اور ایل پی جی کی سعودی آرامکو کنٹریکٹ پرائس میں کمی کے باوجود پاکستان میں ایل پی جی کی قیمتوں میں مطلوبہ کمی سے گریز کیا جا رہا ہے اور ناجائز منافع خوری کیلیے پروڈیوسرز، درآمدکنندگان اور مارکیٹنگ کمپنیاں کارٹل بناکر ایل پی جی کی مقامی قیمتوں میں مطلوبہ کمی کے برعکس قیمت میں اضافے کی حکمت عملی پر گامزن ہوگئی ہیں۔اس ضمن میں آل پاکستان ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز اینڈ ریٹیلرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین محمد اسحاق خان نے بتایا کہ مارکیٹنگ کمپنیوں کی جانب سے کراچی میں گزشتہ 3 روز سے ایل پی جی کی سپلائی معطل ہے، یوں محسوس ہوتا ہے کہ ایل پی جی مافیا گٹھ جوڑ کرتے ہوئے فی ٹن ایل پی جی کی مقامی قیمت ایک بار پھر1 لاکھ روپے تک بڑھانے کی حکمت عملی پر کام کر رہا ہے جبکہ حکومت، متعلقہ ذمے دار وزارت اور ادارے خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ مقامی مارکیٹ میں ایل پی جی کی قیمت سعودی آرامکوکنٹریٹ پرائس سے متصادم ہے اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے تناظر میں فی کلوگرام ایل پی جی کی قیمت 80 روپے سے کم ہونا چاہیے تھی لیکن اس کے برعکس درآمدکنندگان، مارکیٹنگ کمپنیاں اور مافیا ہفتے وار بنیادوں پر ایل پی جی کی قیمتوں میں اضافہ کررہے ہیں۔

 جبکہ ملک میں درآمد ہونے والی ایل پی جی زائد منافع خوری کی غرض سے پنجاب بھیجی جا رہی ہے۔انہوں نے بتایا کہ کچھ درآمدکنندگان شمالی علاقہ جات، فاٹا اور گلگت بلتستان میں اگرچہ درآمدی ایل پی جی کی فروخت نہیں کرتے لیکن فروخت کی جعلی انوائسز کے ذریعے ایف بی آر کی جانب سے ان علاقوں میں جی ایس ٹی کی ترغیب سے ضرور ناجائز فائدہ اٹھارہے ہیں۔#/s#

مزید :

کامرس -