تارکین وطن کے خلاف احتجاج ملک کے لیے شرمندگی کا باعث ہے،جرمن وزیر

تارکین وطن کے خلاف احتجاج ملک کے لیے شرمندگی کا باعث ہے،جرمن وزیر

  

بر لن(آن لائن)جرمنی کے وفاقی وزیر انصاف ہائیکو ماس نے کہا ہے کہ انتہائی دائیں بازو کی ایک تنظیم کی طرف سے تارکین وطن، سیاسی پناہ کے متلاشی اور جرمنی میں اسلام کے خلاف ہفتہ وار مظاہرے ملک کیلئے شرمندگی کا باعث بن رہے ہیں۔جرمنی میں حال ہی میں تشکیل پانے والے ایک گروپ ’پیٹریاٹک یورپیئنز اگسینٹ دی اسلامائزیشن آف دی اوسیڈینٹ کی طرف سے ان دنوں جرمنی کے مختلف شہروں میں مظاہرے کیے جا رہے ہیں۔ گذشتہ روز سابق دارالحکومت بون میں ہونے والے مظاہرے سے قبل جرمن وزیر انصاف کا ’زْوڈ ڈوئچے سائٹنگ‘ نامی اخبار سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ جرمن قوم کو نسلی امتیاز اور حقارت پھیلانے کی کوششوں کیخلاف اٹھ کھڑا ہونا چاہیے۔انہوں نے متنبہ کیا کہ جرمنی میں ’تارکین وطن اور پناہ گزینوں کیخلاف احتجاج‘ بڑھتا جا رہا ہے۔ جرمنی میں ان دنوں جنگ اور بھوک کے شکار ممالک سے آنے والے سیاسی پناہ کے متلاشی افراد کی تعداد میں ریکارڈ اضافہ ہو گیا ہے۔

ہائیکو ماس کا کہنا تھا کہ احتجاج کیلئے سڑکوں پر نکلنے والے شہریوں میں ایسے بھی لوگ تھے جو غیر ملکیوں کیلئے دشمنی یا عداوت کا اظہار کر رہے تھے۔ انہوں نے اس طرز عمل کو ’ناخوشگوار اور نفرت انگیز‘ قرار دیا۔اعتدال پسند بائیں بازو کی جماعت سوشل ڈیموکریٹک پارٹی سے تعلق رکھنے والے جرمن وزیر نے اس بات پر زور دیا کہ ’سول سوسائٹی اور تمام سیاسی جماعتوں کو پیگیڈا نامی اس ’خلاف فطرت‘ گروپ کیخلاف اتحاد قائم کرنا چاہیے۔

مزید :

عالمی منظر -