پشاور دہشتگردی، لاہور کے تعلیمی اداروں کی سکیورٹی ہائی الرٹ کردی گئی

پشاور دہشتگردی، لاہور کے تعلیمی اداروں کی سکیورٹی ہائی الرٹ کردی گئی

  

 لاہور(کرائم سیل)ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف نے پشاور ورسک روڈ پر واقع آرمی پبلک سکول پر دہشت گردوں کے حملے میں معصوم بچوں کی شہادت کے بعد لاہور کے تعلیمی اداروں کی سکیورٹی ہائی الرٹ کرنے کی ہدایت کر دی۔انہوں نے کہا کہ پشاور میں معصوم بچوں پر حملہ افسوس ناک واقعہ ہے جس کی پُرزور مذمت کرتے ہیں۔معصوم بچوں پر حملہ کرنے والے ملک و قوم کے دشمن ہیں جوکسی قسم کی رعایت کے مستحق نہیں۔ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف نے لاہور میں تعلیمی اداروں کی سکیورٹی ہائی الرٹ کرنے کے حوالے سے تمام ڈویژنل ایس پیز کو مراسلہ جاری کر دیا ہے جس میں انہوں نے تمام پولیس آفیسرز کوہدایت کی ہے کہ لاہور میں تعلیمی اداروں میں دہشت گردی کے خدشات کو مدنظر رکھتے ہوئے ملک دشمن عناصر کے ناپاک عزائم کو ناکام بنانے کیلئے شہر میں موجودیونیورسٹیوں، فیڈرل آرمی سکولز، کالجز، انگلش میڈیم و دیگر پرائیویٹ و سرکاری تعلیمی اداروں اور اکیڈمیز میں سخت حفاظتی انتظامات کئے جائیں۔انہوں نے اس سلسلہ میں تمام ڈویژنل ایس پیز، ایس ڈی پی اوز اور ایس ایچ اوز کو ہدایت کی ہے کہ وہ اپنے اپنے علاقہ جات کے تعلیمی اداروں کی انتظامیہ یا پرنسل حضرات سے ذاتی طورپر ملاقات کریں اور حفاظتی اقدامات پر سختی سے عمل درآمد یقینی بنائیں۔تمام تعلیمی اداروں میں داخلی وخارجی راستے کم کروائیں ا ور مستقل سکیورٹی اور سرچ اینڈ سویپنگ کا بندوبست کروائیں۔متعلقہ محکمہ سے تعلیمی اداروں کی چاردیواری کو اونچا اور محفوظ بنوائیں۔ پارکنگ کو تعلیمی ادارہ کی بلڈنگ سے مناسب فاصلے پر رکھا جائے اور تعلیمی اداروں میں پرائیویٹ سکیورٹی گارڈ کسی اچھی کمپنی کے تربیت یافتہ رکھیں اور انکی تصدیق بذریعہ سپیشل برانچ سے کروائی جائے۔تمام تعلیمی اداروں پر CCTV کیمروں کا بندوبست کروایا جائے اور تعلیمی اداروں کے ارد گرد سرچ آپریشن کیا جائے۔ کرایہ داروں کی فہرست تیار کی جائے اور انکی مکمل چھان بین کی جائے۔تمام پولیس آفیسرز اپنے علاقوں میں جہاں پولیس ڈیوٹی کی ضرورت ہو وہاں پر ڈیوٹی کا بندوبست کرے اور خاص طور پر سکول لگنے اور چھٹی کے وقت خود بھی اپنے علاقہ جات کے تعلیمی اداروں کی ڈیوٹی کو الرٹ کرواے اور گشت کو موثر بنائیں۔ ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف نے ایس پی سکیورٹی کیپٹن (ر) لیاقت علی ملک کو تمام ڈویژنل ایس پیز کے ساتھ مکمل کوآرڈینیشن کی ہدایت کی اور ایس پی موبائلز زاہد نواز کو حکم دیا ہے کہ ممکنہ دہشت گردی کو مدِنظر رکھتے ہوئے گشت کے دوران واقع تعلیمی اداروں کا خاص خیال رکھا جائے تاکہ کوئی ناخوشگوار واقع رونما نہ ہو سکے۔

مزید :

علاقائی -