پی ٹی آئی کی ہڑتال سے معیشت کو 20 ارب کا نقصان پہنچا، پرویز ملک

پی ٹی آئی کی ہڑتال سے معیشت کو 20 ارب کا نقصان پہنچا، پرویز ملک

  

لاہور( جنرل رپورٹر) پاکستان مسلم لیگ(ن) کے رہنما وایم این اے پرویز ملک نے کہا کہ تاجر برادری نے تحریک انصاف کی احتجاج کی کال کو مسترد کر کے اپنے کاروبار کھلے رکھے اور صوبائی دارالحکومت کی 165 مارکیٹوں میں سے 90 فیصد مارکیٹیں کھلی رہیں۔پی ٹی آئی کی ہڑتال سے معیشت کو -20 ارب روپے کا نقصان پہنچا۔حکومت نے گھیراﺅ،جلاﺅ اور پرتشدد کاروائیوں کی فوٹیج اور تصاویرحاصل کر لیںہیں اور ملوث افراد کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔تاجر برادری،ٹرانسپورٹروں اور شہریوں کے شکر گزار ہیں کہ انہوں نے مشکلات کے باوجود صبروتحمل کا مظاہرہ کیا اور پرامن رہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایوان وزیراعلی میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر رانا محمد ارشد پارلیمانی سیکرٹری برائے اطلاعات وثقافت، اشرف بھٹی صدر انجمن تاجران،سہیل سرفراز منج صدر انجمن تاجران گلبرگ بورڈ، حاجی محمد اشتیاق صدر اچھرہ بورڈ،فامس سعید بٹ صدر گنپت روڈ،چوہدری عامر صدیق مرکرزی صدر لوہا مارکیٹ مصری شاہ،خلیل عبیر صدر شاہدرہ مارکیٹ،عرفان اقبال شیخ گلبرگ، بشیر لنگا صدر ہال روڈ اور انجم بٹ بھی موجود تھے۔پرویز ملک نے کہا کہ وزیراعظم پاکستان نواز شریف کی قیادت میں پاکستان مسلم لیگ(ن)کی حکومت کاروباراور معیشت کے پھلنے پھولنے کی بات کرتی ہے جبکہ تحریک انصاف ہڑتالوں اور دھرنوں کے ذریعے ملکی معیشت اور تاجروں کے کاروبار کو نقصان پہنچانے کے درپے ہے۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی طرف سے 18 دسمبر کو پورا ملک بند کرنے کی کال کو تاجر برادری یکسر مسترد کرتی ہے اور حکومت تاجروں کے کاروبار کو تحفظ فراہم کرنے کے لئے جامع حکمت عملی اپنائے گی۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے بلوائیوں نے ایمولینسوں کو راستہ نہ دیا جس سے 4 مریض بروقت علاج نہ ملنے سے جاںبحق ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی نے انتظامیہ کو یقین دہانی کرائی تھی کہ وہ 18 مقامات پر دھرنا د ے گی مگر انہوں نے اپنے وعدے کی پاسداری نہ کرتے ہوئے 40 سے زائد مقامات پر دھرنے دئیے۔انہوں نے کہا کہ لاہور کی شاہراہوں پر ٹائر جلا کر شہریوں کی مشکلات میں اضافہ کیا۔انہوں نے کہا کہ میٹرو بس جو غریب آدمی کی سواری ہے کو نقصان پہنچایا گیااور بس کے شیشے توڑ دئیے گئے۔اشرف بھٹی صدر انجمن تاجران انار کلی نے کہا کہ انار کلی بازار کھلا ہوا تھا۔انہوں نے کہا کہ انار کلی بازار سے 25 ہزار افراد کا روزگار وابستہ ہے۔سہیل سرفراز منج نے کہا کہ عمران خان تاجروں کا کندھا استعمال نہ کریں بلکہ معاملات کو سیاسی انداز میں حل کریں۔ انہوں نے کہا کہ گلبرگ میں 80 فیصد دکانیں کھلی تھیں۔حاجی محمد اشفاق صدر اچھرہ بورڈ نے کہا کہ اچھرہ میں ساڑھے چار ہزار دکانیں ہیں جو تمام کھلی تھیں۔انہوں نے کہا کہ کاروبار تاجر کا دل ہے اورکسی کو ایسی سیاست نہیں کرنے دیں گے جس سے تاجروں کا دل بند ہو۔ خامس سعید بٹ صدر گنپت روڈ نے کہا کہ حکومت کو چاہیے کہ وہ کسی سیاسی جماعت کو فری ہینڈ نہ دے۔چوہدری عامر صدیق صدر لوہا مارکیٹ مصری شاہ نے کہا کہ شمالی لاہور میں دکانیں صبح 7 بجے ہی کھل گئی تھیں اور کاروبار زندگی متاثر نہیں ہوا۔ تاجروں نے عمران خان کی کال سے لاتعلقی کا اظہار کیا۔ خلیل عبیر صدر شاہدرہ مارکیٹ نے کہا کہ 15 دسمبر کو شاہدرہ کے 28 بازار کھلے رہے۔ انہوں نے کہا کہ تاجرعمران خان کی احتجاجی سیاست سے تنگ آ گئے ہیں۔عرفان اقبال شیخ نے کہا کہ ہمیں سیاست سے بالاتر ہو کر ملک کی معیشت کے لئے سوچنا چاہیے۔بشیر لنگاہ صدر ہال روڈ نے کہا کہ ہال روڈ کی 40 فصد دکانیں کھلیں رہیں۔ تحریک انصاف کے کارکنوں نے ڈنڈے کے زور پر دکانیں بند کرائیں جس کی بھرپور مذمت کرتے ہیں۔

پرویزملک

مزید :

صفحہ آخر -