سپریم کورٹ نے محکمہ صحت پنجاب سے جعلی ادویات کی روک تھام پر بریفنگ مانگ لی

سپریم کورٹ نے محکمہ صحت پنجاب سے جعلی ادویات کی روک تھام پر بریفنگ مانگ لی

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )سپریم کورٹ نے محکمہ صحت پنجاب سے جعل ادویات کی روک تھام اور مریضوں کو بہتر سہولیات کی فراہمی پر بریفنگ طلب کر لی۔سیکرٹری صحت آج 17دسمبر کوعدالت میں ملٹی میڈیا پروجیکٹر کے ذریعے بریفنگ دیں گے۔سپریم کورٹ رجسٹری لاہور میں مسٹر جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے پی آئی سی میں جعلی ادویات سے دل کے مریضوں کی ہلاکتوں پر ازخود نوٹس کیس کی سماعت کی، سرکاری وکیل نے مو¿قف اختیار کیا جوڈیشل کمیشن کی رپورٹ کی روشنی میں جعلی ادویات کے معاملے پر ایک کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے جو تقریبا اپنی سفارشات مکمل کر چکی ہے،جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ پی آئی سی میں ادویات کے ری ایکشن سے متعداد افراد کی ہلاکتوں کا ایک بڑا سانحہ تھا جبکہ جو لوگ جاں بحق ہوئے تھے ان میں سے متعدد کا پوسٹ مارٹم بھی نہیں کیا گیا آپ بتائیں حکومت نے اپنی غلطی کا کیا تدارک کیا،سرکاری وکیل نے کہاکہ مو¿ثر حکمت عملی مرتب کرلی گئی ہے آئندہ ایسے واقعات نہیں ہوں گے ،مسٹرجسٹس ثاقب نثار نے سرکاری وکیل کو حکم دیا کہ وہ اس معاملے پر عدالت کو مکمل بریفنگ دیں۔ عدالت صحت کے معاملے پرحکومت کا ساتھ دینے کے لئے تیار ہے. فاضل جج نے قرار دیا کہ سرکاری ہسپتالوں کی صورتحال انتہائی خراب ہے. صحت کی ناقص صورتحال پر آنکھیں بند نہیں کر سکتے. عدالت نے مزید سماعت آج 12 بجے تک ملتوی کر دی۔

بریفنگ مانگ لی

مزید :

صفحہ آخر -