ووٹوں کے متعدد تھیلے کھلے نکلے ،کچھ پر سیل نہیں ،کچھ پھٹے تھے

ووٹوں کے متعدد تھیلے کھلے نکلے ،کچھ پر سیل نہیں ،کچھ پھٹے تھے

  

                              لاہور(نامہ نگار)این اے 122 کے ووٹوں کا معائنہ اور گنتی،بالاآخر خزانہ برانچ کا منہ کھل ہی گیا،پی پی 148 اور پی پی 147کا پولنگ ریکارڈ بھی کمیشن کے حوالے کر دیا گیا ۔ووٹوں کے متعدد تھلے کھلے ہوئے نکلے کچھ پر سیل نہیں تھی کچھ پھٹے ہوئے تھے ،انکوائری کمیشن نے ریکارڈ سیل کر دیا، انکوائری کمیشن غلام حسین اعوان نے ریکارڈ کو نادر ہال میں سیل کر دیا ہے تاہم معائنہ کا عمل آج 17دسمبر کوصبح 9:00 بجے شروع ہوگا۔چیرمین تحریک انصاف عمران خان نے سپیکرقومی اسمبلی سردار ایاز صادق کے خلاف دھاندلی کا کیس الیکشن ٹربیوبل میں سال 2013میں دائر کیا جس پر الیکشن ٹربیونل نے ووٹوں کے معائنے کا حکم جاری کیا تھا ،ٹربیونل کی حکم پر ڈی سی اور افس میں واقع ضلعی خزانہ افس کے عملے نے ووٹوں کے تھلے انسپکشن کے لئے مقرر کمیشن غلام حسین اعوان کے حوالے کر دیا ہے،ریٹرننگ آفیسر شاہدہ سعید کے نمائندگان اسٹنٹ ریٹرنگ افیسرآافتاب خان اور شہزاد اخترکی موجودگی میں محکمہ خزانہ کے عملے نے این اے 122، پی پی 147 اور پی پی 148 کے ووٹوں کے 416 تھیلے6 گھنٹوں کی جدوجہد کے بعد ریکارڈ روم سے نکالے اور پھر ضلعی انتظامیہ کے اہلکاروں نے تھیلے نادر ہال منتقل کئے۔قومی اوردونوں صوبائی حلقوں کے متعدد تھلوں کی مبینہ طورپرسیل غائب تھی اور ان کو غیر قانونی طور پر بند کیا ہوا تھا اور بہت سے تھیلے کھلے ہوئے تھے کچھ پھٹے پائے گئے اس موقع پر عمران خان کے نمائندے اور پی پی 147 سے امیدوار شعیب صدیقی کا کہنا تھا کہ دونوں صوبائی اور قومی حلقے کے کل تھیلے 401 ہونے چاہیے تھے کھلے ہوئے تھیلے اور زائد تعداد سے بھاری دھاندلی کے آثار دکھا ئی دے رہے ہیں جبکہ ایاز صادق کے بیٹے ڈاکٹر علی اور پی پی 147سے فاتح رکن صوبائی اسمبلی محسن لطیف کا کہنا تھا دھاندلی کا الزام بے بنیاد ہے ،انکواری سے جیت ان کی ہو گی ۔

این اے 122جانچ

مزید :

صفحہ آخر -