بقاوسلامتی کیلئے ذاتی وسیاسی مفادات سے بالافیصلے کرنے ہوں گے،میاں مقصود

بقاوسلامتی کیلئے ذاتی وسیاسی مفادات سے بالافیصلے کرنے ہوں گے،میاں مقصود

  

لاہور(نمائندہ خصوصی ) امیر جماعت اسلامی لاہورمیاں مقصود احمد نے کہا ہے کہ جس نظریہ پر پاکستان معرض وجود میں آیا اسی پر عمل کرکے یہ ملک ایک رہ سکتا ہے، ترقی کرسکتا ہے اور عوام خوشحال ہوسکتے ہیں۔ وطن عزیز کی بقاوسلامتی کے لیے ذاتی وسیاسی مفادات سے بالافیصلے کرنے ہوں گے اور پوری قوم کو پھر اسی نعرے کی بنیاد پر اکٹھا کرنا ہوگا۔ انھوں نے کہا کہ اسلام کے نام پر معرض وجود میں آنے والے واحد ملک کے دوٹکڑے ہونے پر ہر محب وطن کی آنکھ اشکبار ہوئی اور ملک سے سچی محبت رکھنے والوں کے دل پاش پاش ہوگئے ۔انھوں نے کہا کہ اس ملک کو ایک رکھنے کیلئے جن لوگوں نے اس وقت افواج پاکستان کا ساتھ دیا وہ اس وقت جیلوں اور پھانسیوں کی سزائیں بھگت رہے ہیں ۔پاکستانی اسٹیبلشمنٹ اور نام نہاد عالمی انسانی حقوق کے علمبرداروں کی زبانیں بند ہوچکی ہیں۔ سقوط ڈھاکہ کے اسباب تو بے شمار ہیں لیکن سب سے اہم اور بنیادی وجہ اس نظریہ سے روگردانی تھی جس کی بنیاد پر یہ ملک معرض وجود میں آیا۔ہم بطور قو م اس نظریے کی اصل روح کو بھول گئے یہ جذبہ روز بروز کمزور سے کمزور تر ہوتا چلاگیا اورلوگوں کے درمیان اس نظریے سے محبت اور پیار کے جذبات پروان نہ چڑھ سکے۔ سقوط ڈھاکہ کی دوسری اہم وجہ بھارت ،اسرائیل سمیت دنیا کی اسلام دشمن طاقتوں اور پاکستان میں ان کے سیاسی گماشتوں کی ریشہ ء دوانیاں ہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ آج ہمارے اس بچے کھچے ملک کو بے شمار اندرونی اوربیرونی خطرات کا سامنا ہے۔ سندھ،بلوچستان،کے پی کے اور پنجاب کے آپس کے تعلقات بہت زیادہ خوشگوار نہیں۔کالاباغ ڈیم کا مسئلہ اس کی واضح مثال ہے۔ آج قوم کے سوچنے اور غورکرنے کا دن ہے ۔آج ماضی کی سنگین غلطیوں اور اپنی بداعمالیوں کا احتساب کرنے اور آنے والے دنوں میں اپنی اصلاح کرنے کے عہد کا دن ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -