پی آئی سی اور میو ہسپتال میں گریڈ 1تا 16تک بھرتیاں روک دی گئیں ‘ زبانی احکامات جاری

پی آئی سی اور میو ہسپتال میں گریڈ 1تا 16تک بھرتیاں روک دی گئیں ‘ زبانی احکامات ...

  

لاہور(جاوید اقبال) محکمہ صحت نے امراض قلب کے ہسپتال پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی اور میوہسپتال میں 1سے16گریڈ تک کی بھرتی روک دی ہے اور اس سلسلے میں محکمہ صحت نے نوٹیفیکیشن جاری نہیں کیا بلکہ محکمہ صحت کی اتھارٹی نے دونوں ہسپتالوں کی انتظامیہ کو زبانی احکامات جاری کر دیئے ہیں جن میں کہا گیا ہے کہ گزشتہ ماہ سے شروع کی گئی مختلف پوسٹوں کی بھرتی فوری طور پر روک دی جائے اور درخواست گذاروں اور امیدواروں کو کال لیٹر جاری کئے جائیں ، انٹرویو کے لئے کال لیٹر بھجوائے جائیں، بتایا گیا ہے کہ دونوں ہسپتالوں کی انتظامیہ نے گریڈ 1سے 16تک کی مختلف آسامیاں اخبارات میں باقاعدہ طور پرتشہیر کر کے درخواستیں طلب کی تھیں، مختلف آسامیوں کے لئے میوہسپتال میں22ہزار درخواست گذاروں نے ملازمت کے حصول کے لئے درخواستیں دیں ذرائع کا کہنا ہے کہ پی آئی سی میں بھی 10ہزار سے زائد امیدواروں نے درخواستیں دیں جس کے لئے دونوں ہسپتالوں کی انتظامیہ نے درخواستوں کو فاضل کرنے کا کام مکمل کر لیا تھا جس کے لئے شارٹ لسٹیں بھی مکمل کر لی تھیں اور آئندہ چند دنوں تک امیدواروں کو تحریری امتحان کے لئے بلایا جانے والا تھا کہ اچانک نامعلوم وجوہات کی بنا پر محکمہ صحت نے دونوں ہسپتالوں کی انتظامیہ کو بھرتی کرنے سے روک دیا ہے اور انہیں زبانی حکم دیا گیا ہے کہ وہ کسی امیدوار کا تحریری امتحان لیں نہ انٹرویو کال لیٹر جاری کریں جس کے بعد امیدواروں کی ملازمت حاصل کرنے کی امیدوں پر محکمہ صحت نے پانی پھیر دیا ہے ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ بعض اراکین اسمبلی اور محکمہ صحت کے بڑے زائد العمر من پسند افراد کو بھرتی کرانا چاہتے تھے مگر ہسپتالوں کی سلیکشن کمیٹیوں نے ان کی بات یہ کہہ کر ماننے سے انکار کر دیا کہ وزیر اعلیٰ کے احکامات ہیں کے میرٹ پر بھرتیاں کی جائیں وہ وزیر اعلیٰ پنجاب کے حکم کی نفی نہیں کر سکتے جس پر نہ ہو گا بانس نہ بجے گی بانسری کی، مترادف محکمہ صحت نے بھرتی میں روک دی ہے اس حوالے سے مشیر صحت خواجہ سلیمان رفیق کا کہنا ہے کہ بھرتی روکنے کا علم نہیں ہے تحقیقات کر دیں گے اور بھرتی میرٹ پر ہی ہو گی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -