خواتین کو چہرے کا نقاب کرنے کی ضرورت نہیں ، سعودی عالم کا نیا فتویٰ

خواتین کو چہرے کا نقاب کرنے کی ضرورت نہیں ، سعودی عالم کا نیا فتویٰ

  

ریاض(آئی این پی) سعودی عرب کے ایک عالم دین شیخ احمد الغامدی نے خواتین کے حجاب سے متعلق ایک نیا فتویٰ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ خواتین کو چہرے کا نقاب کرنے کی ضرورت نہیں ہے ، انھیں خوبصورتی کے لیے بناؤ سنگھار کرنے کی اجازت دی جانی چاہیے۔عرب ویب سائٹ کے مطابق شیخ احمد الغامدی نے یہ فتوی ایک ٹی وی کے ٹاک شو میں دیا اور اپنے اس فتوے کے حق میں وہ اپنی بے نقاب اہلیہ کے ساتھ اس ٹی وی پروگرام میں شریک تھے۔ان کی اہلیہ نے حجاب تو اوڑھ رکھا تھا لیکن چہرے کا پردہ نہیں کیا ہوا تھا۔شیخ احمد الغامدی نے کہا کہ خواتین کو چہرے کا نقاب کرنے کی ضرورت نہیں ہے اور انھیں خوبصورتی کے لیے بناؤ سنگھار کرنے کی اجازت دی جانی چاہیے۔سعودی عرب کے قدامت پسند علماء اور حلقوں کی جانب سے علامہ احمد الغامدی کے خلاف گذشتہ ہفتے کے روز اس ٹی وی ٹاک شو کے نشر ہونے کے بعد سے تندو تیز تنقید کا سلسلہ جاری ہے۔تاہم ان کی رائے کے مخالف علماء ان کے فتوے کا دلیل سے جواب دینے کے بجائے ان کی شخصیت پر ذاتی نوعیت کے حملے کررہے ہیں۔سعودی عرب کے مقامی میڈیا کے مطابق شیخ الغامدی کو دھمکیاں بھی مل رہی ہیں۔ٹویٹر پر بعض لکھاریوں نے علامہ خامدی کی تضحیک کی ہے۔ خاص طور پر ٹیلی ویژن پر اہلیہ کو چہرے کا پردہ نہ کرانے پر تنقید کا نشانہ بنایا ۔واضح رہے کہ وہ ماضی میں بھی اسی طرح کے متنازعہ فتوے جاری کرنے کے لیے مشہور رہے ہیں۔ انھوں نے کچھ عرصہ قبل کہا تھا کہ موسیقی حرام نہیں ہے اور خواتین اور مردوں کے مخلوط اجتماعات کی اجازت ہے۔

مزید :

علاقائی -