دہشت گردی کی مذمت کرنے والا معصوم مبین شاہ آفریدی خود نشانہ بن گیا

دہشت گردی کی مذمت کرنے والا معصوم مبین شاہ آفریدی خود نشانہ بن گیا
دہشت گردی کی مذمت کرنے والا معصوم مبین شاہ آفریدی خود نشانہ بن گیا

  

پشاور (ویب ڈیسک) ایک طالب علم جو اپنی کم عمری ہی میں دہشت گردی کی مذمت کرتا رہا، وہ منگل کو پشاور میں اسی دہشت گردی کا نشانہ بن گیا مبین شاہ آفریدی نے فلسطینی سکولوں پر اسرائیلی فوج کے دہشت گرد حملوں کی مذمت کی تھی، اسے کیا معلوم تھا کہ وہ خود ایک دن ایسی ہی دہشت گردی کا نشانہ بن جائے گا۔ منگل کو وہ پشاور میں اپنے سکول پر دہشت گردوں کے حملے میں شہید ہوگیا۔ اس نے فیس بک پر ایک پوسٹ شیئر کی ہے، جس میں ایک فلسطینی بچے کے خون آلود ہاتھ کے ساتھ ”اسرائیلی دہشت گردی روکو“ کے الفاظ تحریر ہیں۔ شاہ نے ایک سال قبل سوشل میڈیا کا استعمال شروع کیا تھا۔ سوشل میڈیا پر اپنی سرورق تصویر میں مبین شاہ آفریدی نے بڑا مضبوط اور حب الوطنی پر مبنی پیغام دیا ”ہم ایک بڑے صدمے کے ساتھ خوبصورت قوم ہیں۔ ہماری مسکراہٹ تمہاری بندوق سے زیادہ طاقتور ہے“ مبین شاہ کی شہادت کے فوری بع شہید کے دوستوں نے اس کی یاد میں پیج بنایا جسے دیکھتے ہی دیکھتے 4 ہزار افراد نے لائیک کیا۔ اس کے ایک دوست نے تبصرہ کیا، میں تصور بھی نہیں کرسکتا کہ وہ آن لائن نہیں ہوگا۔

مزید :

پشاور -