مشرف کو سزائے موت،کامران خان نے عدلیہ کو انتہائی سخت طعنہ دے دیا

مشرف کو سزائے موت،کامران خان نے عدلیہ کو انتہائی سخت طعنہ دے دیا
مشرف کو سزائے موت،کامران خان نے عدلیہ کو انتہائی سخت طعنہ دے دیا

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)سینئر صحافی کامران خان نے سابق صدر پرویز مشرف کو سزائے موت سنائے جانے کے فیصلے پر عدلیہ کو طنزکا نشانہ بنایا ہے۔سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر انہوں نے کہا’مرے کو مارنا کونسی بہادری ہے جب وہ طاقتور تھا زور آور تھا تو اسکے بوٹ چاٹے اسکے منہ سے نکلے الفاظ کو قانون کا درجہ دیا کس کو نہیں پتا کہ آج اسکا کوئی کچھ نہیں بگاڑ سکتا مزا توجب آتا جب اپ اپنے ان بھائی بندوں کو بھی چڑھاتے جو اس زور آور کا آلہ بنے وقت امتحان پتلی گلی سے نکل گئے‘۔

کامران خان کے ٹویٹ پر لوگوں کی بڑی تعداد نے تبصرہ کیا۔سمیعہ سعید نامی صارف نے کہا’جنرل مشرف وہ بندہ ہے جس نے پاکستان کو ہر سطح پے ڈیفنڈ کیا ہے. انڈیا کو سیدھا ان کی زبان میں جواب دیا ہے. ایسے انسان کے خلاف سزائے موت کی سزا. کیا ہو گیا ہے عدلیہ کو. کیا قانون صرف ایک انسان کے لیے ہے. یا باقی تمام شاملِ گناہ کے لیے بھی ہے.

#والیم_دس_کھولا_جائے“

ایس ناصر کے مطابق مشرف کو طاقتور ججوں سے زیادہ میڈیا میں بیٹھے ہوئے کامران خان جیسے چمچوں اور ابن الوقت صحافیوں نے بنایا تھا۔

ابصار شاہ نے تبصرہ کیا کہ ”یہ نظام دن دہاڑے ہسپتالوں پر حملہ کرنے والوں کو سزا تو کیا ان کا کیس تک نہیں سن سکتا۔اس ملک کا پیسہ چوری کرنے والوں کو اتوار والے دن خصوصی عدالتیں لگا کر ضمانتیں مل جاتی ہیں۔سزا یافتہ شخص اس نظام کو انگوٹھا دکھا کے چلا جاتا ہے۔یہ نظام کچھ بگاڑ نہیں سکتا۔“

پی ایس نامی ایک اکاونٹ ہولڈرنے کہا”کامران صاحب ! وقت بدلتا ہے..

.مظلوم کی فریاد آسمان تک جاتی ہے۔لعل مسجد، اکبر بگٹی، محترمہ بے نظیر بھٹو کے ساتھ جو کیا گیا،آج نتیجہ آگیا۔طاقت کا مطلب خدا بن جانا نہیں ہوتا۔“

مزید :

قومی -