بھارت میں جاری مظاہروں میں یہ طلبا قمیض اتار کر کیوں شریک ہیں؟ وجہ جان کر ہنسی آجائے

بھارت میں جاری مظاہروں میں یہ طلبا قمیض اتار کر کیوں شریک ہیں؟ وجہ جان کر ...
بھارت میں جاری مظاہروں میں یہ طلبا قمیض اتار کر کیوں شریک ہیں؟ وجہ جان کر ہنسی آجائے

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں جامعہ ملیہ اسلامیہ کیمپس کے طالب علموں نے گزشتہ روز مسلم مخالف شہریتی ترمیمی بل کے خلاف احتجاج کیا اور پولیس ان طالب علموں پر ٹوٹ پڑی اور انہیں وحشیانہ تشدد کا نشانہ بناڈالا اور کیمپس میں فائرنگ بھی کرتی رہی۔ اب پولیس کی اس بربریت کے خلاف بھارت بھر کی یونیورسٹیوں کے طالب علم سڑکوں پر نکل آئے ہیں اور احتجاج کر رہے ہیں۔ جامعہ ملیہ اسلامیہ کیمپس کے طالب علموں نے بھی قیمضیں اتارکر اپنے ساتھیوں پر تشدد کے خلاف احتجاج کیا ۔

ٹائمز آف انڈیا کے مطابق ان طالب علموں کے قیمض اتار کر احتجاج کرنے کی وجہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کا ایک بیان تھا جو انہوں نے جھاڑکھنڈ میں ایک ریلی سے خطاب کرتے ہوئے دیا۔ انہوں نے کہا تھا کہ ”کانگریس کے کارکن اور اس کے حامی جلاﺅ گھیراﺅ کر رہے ہیں اور املاک کو نقصان پہنچا رہے ہیں۔ یہ جو لوگ پرتشدد کارروائیاں کر رہے ہیں، انہیں ان کے کپڑوں سے ہی پہچانا جا سکتا ہے۔“ وزیراعظم مودی کے اس بیان کے جواب میں طالب علموں نے شرٹس اور قیمضیں ہی اتار ڈالیں اور ان کا کہنا ہے کہ اب نریندر مودی کپڑوں سے ہماری پہچان کرکے دکھائیں۔رپورٹ کے مطابق طالب علموں نے اپنے احتجاج میں مرکزی حکومت اور دہلی پولیس کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔

مزید :

بین الاقوامی -