چیف جسٹس نے ایکسٹینشن کیس پبلک انٹرسٹ میں سنامگر سانحہ ساہیوال، صلاح الدین اور سانحہ پی آئی سی میں یہاں پبلک انٹرسٹ کہاں گیا؟ ارشاد بھٹی نے سوال اٹھادیا

چیف جسٹس نے ایکسٹینشن کیس پبلک انٹرسٹ میں سنامگر سانحہ ساہیوال، صلاح الدین ...
چیف جسٹس نے ایکسٹینشن کیس پبلک انٹرسٹ میں سنامگر سانحہ ساہیوال، صلاح الدین اور سانحہ پی آئی سی میں یہاں پبلک انٹرسٹ کہاں گیا؟ ارشاد بھٹی نے سوال اٹھادیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) تجزیہ کار ارشاد بھٹی نے چیف جسٹس کی جانب سے آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کے معاملے کو عوامی مفاد قرار دیے جانے پر سوالات اٹھادیے۔

اپنے ایک ٹویٹ میں تجزیہ کار ارشاد بھٹی نے لکھا وہ کہنا یہ تھا کہ محترم چیف جسٹس نے فرمایا ’ ایکسٹینشن کیس پبلک انٹرسٹ میں سنا‘ مگر سانحہ ساہیوال، سانحہ صلاح الدین اور سانحہ پی آئی سی، یہاں پبلک انٹرسٹ کہاں گیا؟ یہاں پبلک انٹرسٹ کیوں سویا رہا، حالانکہ ان تینوں سانحات میں تو پبلک مری بھی۔

پرویز مشرف کیس کے فیصلے پر بلاول بھٹو زرداری نے جمہوریت کو بہترین انتقام دیا تو اس پر تبصرہ کرتے ہوئے لکھا کہ آج کے فیصلے پر بلاول کی ٹویٹ یہی بنتی تھی کیونکہ مشرف نے جب مارشل لا لگایا تو بے نظیر بھٹو نے اسے خوش آمدید کہا ، آصف زرداری نے مشرف سے ڈیل کی اور بے نظیر بھٹو نے مشرف سے این آر او کیا۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -