اصل کامیابی

اصل کامیابی

  

        اسلم پانچویں جماعت کا طالب علم ہے،لیکن اسے اپنی پڑھائی سے کوئی لگاؤ نہیں تھا۔ایک دن اسلم کو کسی کام سے اسکول کی لائبریری میں جانا پڑا اور وہاں جا کر بہت حیران ہوا،کیونکہ وہاں بہت خاموشی تھی اور اسکول کے کچھ بچے وہاں بیٹھ کر پڑھ رہے تھے۔

    اسلم نے ان سے پوچھا کہ وہ کھیل کیوں نہیں رہے؟

    انھوں نے بتایا:”اگر وہ اپنا قیمتی وقت کھیل کود میں ضائع کریں گے تو بڑے افسر کیسے بنیں گے؟“

    اسلم نے کہا:”مگر زیادہ پڑھنے سے کیا فائدہ ہو گا؟پڑھنے کے لئے تو ساری عمر پڑی ہے۔“

    انھوں نے کہا:”اگر وقت پہ اپنا کام نہیں کریں گے تو وہ دوسروں سے پیچھے رہ جائیں گے اور اپنے ملک کا نام روشن نہیں کر سکیں گے۔اگر ہم اپنا آدھا وقت تعلیم پر لگائیں تو ایسے بہت سے کام کر سکتے ہیں جن سے ہمارے ملک کا نام روشن ہو سکتا ہے۔اگر علم نہ ہو تو انسان کچھ بھی نہیں کر سکتا اور اگر انسان کے پاس علم جیسی طاقت ہو تو وہ آسمان کی بلندیوں کو بھی چھو سکتا ہے۔“

    اسلم جو یہ سب کچھ بہت حیرانی سے سن رہا تھا اچانک فیصلہ کیا کہ علم حاصل کرنا بہت ضروری ہے۔اس دن کے بعد اسلم نے پکا ارادہ کر لیا کہ وہ دل لگا کر پڑھائی کرے گا اور اپنے ملک کا نام روشن کرے گا۔

مزید :

ایڈیشن 1 -