فوڈ اتھارٹی ٹیموں کا جنوبی پنجاب میں آپریشن، جرمانے

فوڈ اتھارٹی ٹیموں کا جنوبی پنجاب میں آپریشن، جرمانے

  

 ملتان،ڈیرہ غازیخان (سپیشل رپورٹر،سٹی رپورٹر)پنجاب فوڈ اتھارٹی نے خانیوال انڈسٹریل ایریا میں 52 کنال سیوریج کے پانی سے کاشت سبزیاں ہل چلا کر تلف (بقیہ نمبر17صفحہ6پر)

کردہں۔ سیوریج کے زہریلے پانی سے پالک اور گوبھی کی فصل کاشت کی گئی تھی۔ بیشتر سبزیوں کو ٹیوب ویل کے صاف پانی سے سیراب کیا جارہا تھا۔ سبزیوں اور دیگر خوراک کی کاشت کے لیے ٹیوب ویل کا پانی استعمال کیا جائے۔اس موقع پر ڈی جی فوڈ اتھارٹی مدثر ریاض ملک کا کہنا تھا کہ آلودہ پانی سے اگی سبزیوں میں شامل زہریلے مادے خوراک کا حصہ بن کر متعدد موزی بیماریوں کا باعث بنتے ہیں۔ انڈسٹریل ویسٹ اور سیوریج کے پانی سے صرف آؤٹ ڈور پلانٹس، پٹسن اور دیگر ڈیکوریشن پلانٹس اگائے جاسکتے ہیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ کھیت سے پلیٹ تک محفوظ خوراک کی فراہمی پنجاب فوڈ اتھارٹی کا اولین فریضہ ہے۔ میعاری خوراک کی عدم فراہمی پر پنجاب فوڈ اتھارٹی کی کارروائیاں جاری  ہے  فوڈ سیفٹی ٹیموں کے ڈی جی خان، لیہ اور راجن پور میں کریانہ سٹورز، ریسٹورنٹس اور سویٹس اینڈ بیکرز یونٹس پر چھاپے، خوراک کا میعار بہتر نہ ہونے پر بھاری جرمانے عائد،6 کلو ممنوعہ اشیاء اور 3 کلو گلے سڑے فروٹ تلف،تفصیلات کے مطابق سمینہ چوک ڈی جی خان میں واقع کیٹرنگ یونٹ کو گندے برتن استعمال کرنے پر بھاری جرمانہ عائد کر دیاگیا اس کے علاوہ پرانی منڈی ڈی جی خان میں ممنوعہ اشیاء فروخت کرنے، خوراک کو زمین پر سٹور کرنے پر 2 کریانہ سٹورز کو 20 ہزار روپے جرمانے عائد کر دیئے گئے۔ اسی طرح چوک اعظم لیہ میں بیکری یونٹ کو ناقابلِ سراغ کیمیکلز کا استعمال کرنے، فریزر میں گندگی پا? جانے پر 15 ہزار روپے جرمانہ کیا گیا مزید ڈیرا روڈ راجن پور میں ریسٹورنٹ کو خوراک میں حشرات پائے جانے، ورکرز کے میڈیکلز سرٹیفکیٹس کی عدم موجودگی پائے جانے پر 10 ہزار روپے جرمانہ عائد کیا گیا۔ اس موقع پر ڈی جی پنجاب فوڈ اتھارٹی مدثر ریاض ملک کا کہنا تھا کہ عوام کی صحت کے ساتھ کھلواڑ کرنے والوں کیخلاف آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائے گا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -