روس نے یوکرین پر میزائلوں کی بارش کردی

روس نے یوکرین پر میزائلوں کی بارش کردی
روس نے یوکرین پر میزائلوں کی بارش کردی
سورس: File

  

کیف (ڈیلی پاکستان آن لائن) روس نے یوکرین کے ساتھ جاری جنگ میں اب تک کا بڑا حملہ کرتے ہوئے جمعہ کے روز یوکرین پر 70 سے زیادہ میزائل داغ دیے۔ اس روسی حملے کے نتیجے میں  یوکرین کے دوسرے سب سے بڑے شہر میں بجلی  کی فراہمی معطل ہوگئی  اور کیف کو ملک بھر میں ہنگامی بلیک آؤٹ نافذ کرنا پڑا۔

خبر ایجنسی روئٹرز کے مطابق کیف حکام نے بتایا کہ  تین افراد اس وقت ہلاک ہوئے جب وسطی کریوی ریہ میں ایک اپارٹمنٹ بلاک کو نشانہ بنایا گیا اور دوسرا جنوب میں خیرسن میں گولہ باری سے ہلاک ہوا۔  مشرقی یوکرین میں روسی تنصیبات کے اہلکاروں نے کہا ہے کہ یوکرین کی گولہ باری سے 12 افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

شام کے ایک ویڈیو خطاب میں یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے کہا کہ روس کے پاس اب بھی کئی اور بڑے حملوں کے لیے کافی میزائل موجود ہیں اور انہوں نے ایک بار پھر مغربی اتحادیوں پر زور دیا کہ وہ کیف کو زیادہ سے زیادہ بہتر فضائی دفاعی نظام فراہم کریں۔ زیلنسکی نے کہا کہ یوکرین اتنا مضبوط ہے کہ وہ بھرپور جواب دے سکتا ہے۔  

کیف نے جمعرات کو خبردار کیا تھا  کہ ماسکو نے اگلے سال کے اوائل میں ایک نئے آل آؤٹ حملے کی منصوبہ بندی کی ہے۔ روس نے جنگ کے میدان میں کئی شکستوں کے بعد اکتوبر کے اوائل سے تقریباً ہفتہ وار یوکرینی توانائی کے بنیادی ڈھانچے پر میزائلوں کی بارش کی ہے، لیکن جمعہ کے حملے نے بہت سے دوسرے حملوں  کے مقابلے میں زیادہ نقصان پہنچایا ہے۔

یوکرین کی فضائیہ نے کہاہے  کہ روس نے اپنے فضائی دفاع کی توجہ ہٹانے کے لیے یوکرین کے قریب جنگی طیارے اڑائے ہیں۔ اس کے آرمی چیف نے کہا کہ 76 میں سے 60 روسی میزائلوں کو مار گرایا گیا ہے لیکن توانائی کے وزیر جرمن گالوشینکو نے کہا کہ بجلی پیدا کرنے والی کم از کم نو تنصیبات کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ ماسکو کا کہنا ہے کہ ان حملوں کا مقصد یوکرین کی فوج کو غیر فعال کرنا ہے۔ یوکرین کے حکام انہیں جنگی جرم قرار دیتے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -