فاروق ستار دستبردار ، سینیٹ امید وار نامزد کرنے کا اختیار بہادر آباد مرکز کو دیدیا

فاروق ستار دستبردار ، سینیٹ امید وار نامزد کرنے کا اختیار بہادر آباد مرکز کو ...

کراچی (سٹاف رپورٹر)متحدہ قومی موومنٹ کے کنوینئر فاروق ستار اپنے نامزد سینیٹ امیدواروں سے دستبردار ہوگئے ،انہوں نے بہادرآباد مرکز کو امیدوار نامزد کرنے کا اختیار دینے کا اعلان کردیا۔پی آئی بی کالونی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے فاروق ستار نے کہا کہ سینیٹ کے ٹکٹوں کا جھگڑا ختم ہوگیا مگر سربراہ اور فیصلہ سازی میں اسکے حتمی اختیارات کا مسئلہ تاحال موجود ہے ،میری کوئی انا نہیں ،بس عزت نفس کا مسئلہ ہے،میں ڈیمانڈ کرنا نہیں چاہتا پارٹی کمانڈ کرنا چاہتا ہوں۔انہوں نے کہا کہ سینیٹ الیکشن کی چار نشستوں کیلئے تحلیل شدہ رابطہ کمیٹی کے اراکین سے کہتا ہوں کہ اپنی مرضی کے 4نام دیدیں،وہی میرے امیدوار ہونگے ،میں انکے ناموں کا اعلان کردوں گا۔فاروق ستار نے کہا کہ سینیٹ نشستوں کے اراکین کی نامزدگی کا اختیار بہادر آباد گروپ کو دینے کا اقدام بڑے پن کے مظاہرے کے تحت کیا ، آپ کو شاید یہ فیصلہ بڑا نہ لگے۔ایم کیو ایم پاکستان کے سربراہ نے کہ یہ تاثر نہیں دینا چاہتا کہ سینیٹ نشستیں یا کوئی فرد ہمارے اختلافات کی وجہ ہے،کارکنوں میں یہ بدگمانی نہیں پھیلائی جائے کہ فاروق بھائی اڑے ہوئے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ اب میری طرف یہ الزام نہیں آنا چاہیے کہ میں سینیٹ نشستوں کے ناموں کیلئے ناراض ہوں،میں تین مرتبہ بہادرآباد جارہا تھا کوئی نہ کوئی ایکشن وہاں ہوا کہ میں نہیں جاسکا۔فاروق ستارنے کہا کہ بہادر آباد والے الیکشن کمیشن گئے تھے ،انٹرا پارٹی الیکشن کو رکوانے کیلئے لیکن انہیں اسٹے نہیں ملا،بہادرآباد گروپ کا اجلاس غیر آئینی ہے،آج اس کا نتیجہ آجائیگا۔انہوں نے کہا کہ بہادرآباد گروپ نے مجھے دو تہائی اکثریت سے ہٹایا تھا،الیکشن کمیشن نے مجھے پارٹی کے کنوینئرکے طور پر برقرار رکھا اور میرے ہی نام سے پارٹی کو رجسٹر رکھا،کارکنوں کو مزید گمراہ نہ کیا جائے۔ان کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن کو کہا گیا کہ ایم کیو ایم پاکستان کی سربراہی کی رجسٹرڈ کسی اور کے نام سے کریں لیکن پارٹی کو میرے ہی نام پر ہی رجسٹرڈ رکھا جبکہ پارٹی اور پتنگ کا نشان بھی میرے پاس ہے، کارکنوں کو گمراہ نہیں کیا جائے۔ کارکن بھی تحیل شدہ رابطہ کمیٹی کے گمراہ کن پروپیگنڈے میں نہ آئیں۔

فاروق ستار

کراچی (سٹاف رپورڑر) متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے کنوینر ڈاکٹر خالدمقبول صدیقی نے کہا ہے کہ ایم کیوایم پاکستان کے کارکنان ، ایم کیوایم پاکستان کے نظریئے کے محافظ ، اس کے آئین کے پاسبان اور اصولوں کے علمبردار ساتھیوں نے جنرل ورکرز اجلاس میں ہزاروں کی تعداد میں شرکت کرکے ایم کیوایم کو توڑنے کے تمام خوابوں کو چکنا چور کردیا ہے ، کارکنان کا یہ اجلاس ، اس کا معیار اور تعداد بتا رہا ہے کہ ایم کیوایم تقسیم نہیں تطہیر ہوئی ہے ۔یہ اجلاس کسی کے مقابلے ، بتانے اور ڈرانے کیلئے نہیں ہے ، یہ اجلاس 18مارچ سے ایک ماہ پہلے کیاجاتا ہے یہ روٹین کا اجلاس ہے یہ کسی کے مقابلے کیلئے نہیں مل بیٹھ کر مشورہ کرنے کیلئے ہے۔انہوں نے کہاکہ پاکستان اپنے خوابوں کی منزل تک جس راستے سے جائے گا وہ جمہوریت کا راستہ ہے ، ہمیں فیصلہ کرنا ہے کہ پاکستان کے نصیب میں وہ جمہوریت کس طرح لائی جائے ،پاکستان اس بات کو تسلیم کرے کہ ہم متروکہ سندھ کے وارث ہیں اور اپنے اس حق کو ہم آنے والے برسوں میں اور مضبوطی کے ساتھ اٹھائیں گے۔انہوں نے فاروق ستار بھائی کو دعوت دی کہ وہ آئیں اور تنظیم چلائیں لیکن پارٹی آئین سے بالاتر ہوکر نہیں ، پارٹی کی طاقت کارکنان ہیں جو جنرل ورکرز اجلاس میں ہزاروں کی تعداد میں موجود ہیں ۔ ڈاکٹر فاروق ستار بھائی کسی غریب کارکن کیلئے اختیار مانگتے تو یہ اسمبلی آپ کو اختیار دیدیتی ۔ان خیالات کااظہار انہوں نے گلشن اقبال بلاک 13-Bمیں واقع منگل بازار گراؤنڈ میں منعقد کئے گئے ایم کیوایم پاکستان کے بڑے جنرل ورکرز اجلاس کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔

خالد مقبول صدیقی

مزید : صفحہ اول


loading...