نجی سیکٹر فروغ تعلیم میں حکومت کا بھر پور ساتھ دے گا ،محمد سلیم خان

نجی سیکٹر فروغ تعلیم میں حکومت کا بھر پور ساتھ دے گا ،محمد سلیم خان

بٹ خیلہ( بیورورپورٹ )پرائیویٹ ایجوکیشن نیٹ ورک (PEN)کے صوبائی صدر محمد سلیم خان نے کہا ہے کہ نجی سیکٹرفروغ تعلیم کیلئے تمام مثبت حکومتی اقدامات میں صوبائی حکومت کا ساتھ دے گا مگر ایسی کوئی سازش کامیاب نہیں ہونے دیں گے جوغیر ملکی ڈونرزکے کہنے پر ہماری دینی و ملی روایات کے مخالف تعلیمی نظام کو پروان چڑھانے میں مدد گار ثابت ہوشعبہ تعلیم کے بعض ذمہ داران افسران کی جانب سے عدلیہ کے فیصلے کی ادھوری وضاحت توہین عدالت کے مترادف ہے ہم نہیں چاہتے کہ غیروں کے کہنے پر پاکستان کا تعلیمی ڈھانچہ اسلام اور پاکستان مخالف سازشوں کی زد میں آکر قوم کے تشخص کا بگاڑ دے خیبر پختونخوا حکومت سرکاری و نجی تعلیمی ادروں کے طلباء و طالبات کواسسمنٹ کے نام پرذہنی مریض بنانے کی بجائے حقیقی و تعمیری اصلاحات لائے ہم ممنون ہیں پشاور ہائی کورٹ کے جنہوں نے ہمارا موقف تسلیم کرتے ہوئے پانچویں اور آٹھویں جماعت کے اسسمنٹ اور بورڈ امتحانات سے نجی تعلیمی اداروں کو استثنا دیا اورصوبائی حکومت کو ہدایات جاری کیں کہ وہ پانچویں اور آٹھویں جماعت کے اسسمنٹ و بورڈ امتحانات پرتمام اسٹک ہولڈرز کو اعتماد میں لے کر باضابطہ قانون سازی عمل میں لائے ان خیالات کا اظہار انہوں نے مقامی ہوٹل میں نجی تعلیمی اداروں کے سربراہان کے ہمراہ تنظیمی امور پر منعقدہ مشاورتی اجلاس کے بعد میڈیا سے اپنی خصوصی بات چیت کے دوران کیا انہوں نے مزید کہا اگر صوبائی حکومت آنے والے تعلیمی سال کیلئے ایسا کوئی نظام لانا چاہتی ہے توتمام اسٹک ہولڈرز کو اعتماد میں لے کر ان سے ٹیبل ٹاک کرے ہمارا پہلے بھی یہی موقف تھا اور آئندہ بھی یہی موقف رہے گا کہ نجی سیکٹرفروغ تعلیم کیلئے تمام مثبت حکومتی اقدامات میں صوبائی حکومت کا ساتھ دے گا مگر ایسی کوئی سازش کامیاب نہیں ہونے دیں گے جوغیر ملکی ڈونرزکے کہنے پر ہماری دینی و ملی روایات کے مخالف تعلیمی نظام کو پروان چڑھانے میں مدد گار ثابت ہوشعبہ تعلیم کے بعض ذمہ داران افسران کی جانب سے عدلیہ کے فیصلے کی ادھوری وضاحت توہین عدالت کے مترادف ہے بچے چاہے سرکاری سکولوں کے ہوں یا نجی تعلیمی اداروں کے وہ اسی معاشرے کے بچے ہیں اور قوم کا مستقبل بھی انہی سے وابستہ ہے انہیں ایک کامل مسلمان اور محب وطن پاکستانی بنانا ہماری اوّلین ذمہ داری ہے جس کیلئے ایسا ہی نظام تعلیم چاہئے جو ہمارے معاشرے کی دینی و ملی روایات کاتحفظ کر سکے۔

B

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...