مضاربہ سکینڈل میں ملوث دو ملزمان کو قید وجرمانہ کی سزا

مضاربہ سکینڈل میں ملوث دو ملزمان کو قید وجرمانہ کی سزا

پشاور(نیوزرپورٹر)احتساب عدالت کے جج اشتیاق احمد نے مضاربہ سکینڈل میں گرفتار دو ملزمان کو جرم ثابت ہونے کے تین ،تین سال قید اور مجموعی طور پر 38لاکھ اور 48ہزار روپے جرمانہ کی سزاء سنادی ،جبکہ مرکزی ملزم محمود الحسن مفرور قرار دیے گئے نیب پراسکیوٹر محمد ریاض خان مہمند کے مطابق ملزمان عثمان اور روشن دین ساکنان مانسہرہ پر الزام تھا کہ انہوں نے سرمایہ کاری کے ایک نجی فرم کے نام پر کئی سادہ لوح افراد سے سرمایہ کاری اور منافع کے نام پرایک کروڑ 84لاکھ روپے لیے تھے اور بعد میں روپوش ہوئے تھے جس کے بعد نیب نے متاثرین کے شکایات پر تحقیقات کرکے 2015میں ریفرنس دائر کردی اور بعد میں کار وائی کرکے ملزم کو گرفتار کیا۔ گزشتہ روز فاضل جج نے سماعت مکمل ہونے اورملزمان کے خلاف جرم ثابت ہونے پر دونوں مجرمان کو تین ،تین سال قید اورر مجموعی طور پر 38لاکھ اور 48ہزار روپے جرمانہ کی سزاء سنادی۔ واضح رہے کہ مذکورہ ریفرنس میں چوتھا ملزم محمد شعیب نے پلی 97لاکھ روپے پلی بار گینگ کی تھی ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...