اخترآباد: ویڈیو سکینڈل، گرفتار مرکزی ملزم کا جسمانی ریمانڈ، شرمناک انکشافات

اخترآباد: ویڈیو سکینڈل، گرفتار مرکزی ملزم کا جسمانی ریمانڈ، شرمناک انکشافات
اخترآباد: ویڈیو سکینڈل، گرفتار مرکزی ملزم کا جسمانی ریمانڈ، شرمناک انکشافات

  


اوکاڑہ( ناویب ڈیسک) سکول کے طلباءو طالبات کے غیراخلاقی ویڈیو سکینڈل کے مرکزی ملزم کے جسمانی ریمانڈ کے دوران شرمناک انکشافات سامنے آگئے، ملزم سکول کے معصوم بچے، بچیوں سے زیادتی کے ساتھ ساتھ انکی ماﺅں اور بہنوں کو بھی بلیک میل کرکے زیادتی کا نشانہ بناتا رہا، گھناﺅنے جرم میں اسکی ٹیچر بہنیں بھی شامل تھیں۔

روزنامہ نوائے وقت کی رپورٹ کے مطابق ایس ایچ او حجرہ شاہ مقیم کے مطابق خفیہ اطلاع پر اے ایس پی دیپالپور نے گزشتہ دنوں حجرہ شاہ مقیم کے نواحی گاﺅں مہروک کلاں میں قائم پرائیویٹ الحافظ اسلامک پبلک سکول اینڈ اکیڈمی کے مالک، لیسکو ملازم حافظ محمد یوسف کو گرفتار کرکے اسکے قبضہ سے مختلف آلات برآمد کرلئے تھے۔ پولیس کے مطابق گرفتار ملزم سے برآمد ہونیوالے 50 سے زائد ویڈیو کلپس میں وہ سکول کے طلباءو طالبات کی آپس میں زیادتی کرواتا اور خود بھی ان سے زیادتی کرتا دکھائی دیا۔ ملزم کو انسداد دہشت گردی کورٹ ساہیوال میں پیش کرکے پولیس نے اسکا پانچ روزہ جسمانی ریمانڈ حاصل کررکھا ہے۔

پولیس نے بتایا کہ ملزم 10 سال سے سکول کی آڑ میں فحش اور گھناﺅنے دھندے میں ملوث ہے اور اب تک لاتعداد لڑکے، لڑکیوں کو اپنی ہوس اور درندگی کا نشانہ بنا چکا ہے۔ ایس ایچ او کے مطابق ملزم حافظ یوسف نے سکول کے دفتر نما ڈرائنگ روم کو اپنی کمین گاہ بنا رکھا تھا۔ وہ طلبہ اور طالبات کو اس کمرے میں بلاکر پہلے انہیں غیراخلاقی فلمیں دکھاتا اور پھر انہیں ایک دوسرے کے ساتھ زیادتی کرنے پرمجبور کرتا اور اس دوران انکی خفیہ کیمرے کے ذریعے شرمناک ویڈیو فلم بنالیتا جو کہ بعد میں ان بچوں کو بلیک میل کرکے انہیں اپنی ہوس کا نشانہ بناتا۔

ملزم محض اسی پر اکتفا نہیں کرتا بلکہ وہ ان ویڈیو فلموں سے زیادتی کا شکار لڑکے، لڑکیوں کی ماﺅں اور بہنوں کو بھی اپنی تیار کردہ فلمیں دکھا کر بلیک میل کر کے زیادتی کرتا۔ پولیس کے مطابق ایسے واقعات پر گاﺅں اور گردو نواح کے لوگ جانتے ہوئے بھی خاموشی اختیارکرلیتے تھے۔ ملزم سے مزید اہم انکشافات کی توقع کی جارہی ہے۔

مزید : علاقائی /پنجاب /اوکاڑہ


loading...